63

پاکپتن: امریکی مداخلت کا ڈھنڈورا پیٹنے پر قوم کیونکر یقین کر سکتی ہے۔؟ ڈاکٹر ساجد لطیف مانیکا



پاکپتن (رانا صفدر سے) عمران خان کےامریکی مداخلت کا ڈھنڈورا پیٹنے پر قوم کیونکر یقین کر سکتی ہے۔؟

امریکی مداخلت کو مسترد کرنے اور امریکی غلامی سے آزادی کے بیانیے کو ہم تسلیم کر لیتے اگر عمران خان صاحب وعدے کے مطابق قوم کی بیٹی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کیلئے امریکی حکام سے بات چیت کرتے اور زور ڈالتے۔ ڈاکٹر ساجد لطیف مانیکا امیر جماعت اسلامی PP 191 پاکپتن کی صحافیوں سے گفتگو۔

ہم تسلیم کر لیتے اکر خان صاحب چند ماہ قبل امریکی دباوٴ کو مسترد کر کے ملائیشیا کانفرنس میں جاتے۔ ہم قبول کرتے اگر خان صاحب طالبان کی حکومت کو تسلیم کرتے۔ ہم تائید کرتے اگر خان صاحب جو بائیڈن کی کال کے انتظار میں حیران و پریشان نا ہوتے۔ ہم تصدیق کرتے اگر ایف اے ٹی ایف کے حق میں قانون سازی سے باز رہتے۔ ہم توثیق کرتے اگر اسٹیٹ بینک کو آئی ایم ایف کے ہاتھ گروی رکھنے کا رسوا کن فیصلہ نا ہوا ہوتا.

ہم مان جاتے اگر سی پیک معاملے میں سرد مہری نا دکھائی جاتی اور ہم منظور کر لیتے اگر اسد عمر کو ہٹا کر حفیظ شیخ کے ہاتھ خزانے کی چابی نہ دی جاتی۔ کون انکار کر سکتا ہے کہ یہ سارے کارنامے امریکی مداخلت ہی کی مرہون منت تھے۔ تو اب آ کر امریکی مداخلت کا ڈھنڈورا پیٹنے پر قوم کیونکر یقین کر سکتی ہے۔؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں