210

پاکپتن: شجر کاری میں حصہ لینا ہم سب کا قومی فریضہ ہے. راو رحمان اللہ خان صدر ڈسٹرکٹ بار

پاکپتن (نمائندہ خصوصی) شجر کاری میں حصہ لینا ہم سب کا قومی فریضہ ہے ان خیالات کا اظہارصدر ڈسٹرکٹ بار راو رحمان اللہ ایڈووکیٹ نے گرین اوسز کے تعاون سے جاری شجر کاری مہم کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا.

پاکستان ان ممالک کی فہرست میں شامل ہے جہاں درخت ہونے کے باوجود درختوں کی کمی ہے جس سے موسمیاتی شدت اور آکسیجن کی کمی کا سامنا ہے اس مسئلے کے حل کیلئے 10بلین ٹری سونامی منصوبہ قابل ستائش اور مددگار ثابت ہوگا۔ جس میں حصہ لینا ہم سب کا قومی فریضہ ہے. ان خیالات کااظہار راؤ رحمان اللّه صدر ڈسٹرکٹ بار، اویس سلطان پاشا جنرل سیکرٹری بار، میاں محمد احمد وٹو جنرل سیکرٹری انصاف لائرز فورم پنجاب اور حکیم لطف اللہ سیکرٹری جنرل پاکستان سوشل ایسوسی ایشن، ڈاکٹر شاہد مرتضیٰ چشتی صدر انجمن فلاح مریضان نے گرین اوسز اور ڈسٹرکٹ انٹی ٹی بی ایسوسی ایشن کے تعاون سے آفس ڈسٹرکٹ بار میں پھل دار پودوں کی شجرکاری کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ جب ہم اپنے سیاحتی مقامات میدانوں اور پہاڑوں کو مزید شجرکاری سے سرسبز و شاداب اور صاف ستھرا کریں گے تو درخت ان کی خوبصورتی میں چار چاند لگا دیں گے۔ میدانی علاقوں میں جہاں فصلوں اور ذخیروں کی جگہ ہاؤسنگ سوسائٹیز نے لے لی ان کے متبادل جنگل اگائے جائیں اور ہاؤسنگ سوسائٹیز میں شجر کاری کو لازم قرار دیا جائے۔

ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن اپنے اور اپنے پیاروں کے نام پر پودے لگائیں یہ ثواب کا کام اور صدقہ جاریہ ہے۔ اپنے گھروں، ڈیروں، تعلیمی اداروں، ہسپتالوں، تفریحی مقامات قبرستانوں اور نہر کنارے سایہ دار اور پھل دار درخت لگائیں اور پھول دار پودے لگائیں جن پر تروتازہ پھول لگیں گے تو ماحول خوشگوار ہوگا اور درخت سایہ کے ساتھ ساتھ پھل بھی فراہم کریں گے۔ جیسا کہ ہم جانتے ہیں کہ بڑھتی ہوئی مہنگائی نے پھل غریب آدمی کی دسترس سے دور کردئیے. ہیں پھل دار پودے لگانے سے جب عوام کو مفت پھل میسر ہونگے تو وہ ان درختوں کی حفاظت بھی خود کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں