66

اوکاڑہ : بے پناہ وسائل ہونےکے باوجود مسلم ممالک اپنا مضبوط میڈیا نہیں بنا سکے. پروفیسر زکریا ذاکر.

اوکاڑا (خصوصی رپورٹ) بے پناہ وسائل ہونےکے باوجود مسلم ممالک اپنا مضبوط میڈیا نہیں بنا سکے ان خیالات کا اظہار پروفیسر زکریا ذاکر نے آن لائن سیمینار میں گفتگو کرتے ہوئے کیا.

اوکاڑہ یونیورسٹی کے شعبہ ابلاغیات نے ایک آن لائن سیمینار کا انعقاد کیا جس میں ملک کے معروف اسکالرز اور صحافیوں نے مسئلہ فلسطین میں میڈیا کے کردار پہ بحث کی۔ سیمینار کی صدارت یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد زکریا ذاکر نے کی۔ مسلم ممالک کے میڈیا پہ بات کرتے ہوئے وائس چانسلر کا کہنا تھا کہ بے پناہ وسائل ہونےکے باوجود مسلم دنیا نے اپنے مضبوط میڈیا ادارے بنانے میں کبھی دلچسپی نہیں لی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جدید دنیا میں بیانیے میڈیا کے ذریعے ہی بنائے اور مٹائے جا سکتے ہیں۔

سیمینار کے مقاصد بیان کرتے ہوئے شعبہ ابلاغیات کے سربراہ ڈاکٹر زاہد بلال نے کہا کہ اس طرح کے ایونٹس اہم معاملات میں بین الاقوامی میڈیا کے کردار کو سمجھنے کےلیے طلباء کو مواقع فراہم کرتے ہیں۔ پنجاب یونیورسٹی کی ہیومین رائٹس چیئر ڈاکٹر عابدہ اشرف نے بتایا کہ جب بھی بین الاقوامی میڈیا میں مسئلہ فلسطین کا ذکر آتا ہے تو اسرائیل کو ہمیشہ مظلوم بنا کر پیش کیا جاتا ہے اور فلسطینیوں کے اوپر ہونے والے مظالم کو نظر انداز کیا جاتا ہے۔

معروف صحافی منصور جعفر نے مسئلہ فلسطین کے تاریخی پس منظر پہ روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ بین الاقوامی میڈیا نے ہمیشہ سے مخصوص الفاظ کے چناو کے ذریعے اس مسئلے کی حقیقت کو کبھی واضع طور پہ آشکار ہونے نہیں دیا۔ ایک اور سینیئر صحافی عامر ہاشم کا کہنا تھا کہ پاکستانی میڈیا کو مسئلہ فلسطین اس انداز میں پیش کرنا چاہیے کہ ہماری نوجوان نسل کو اس کی تاریخ اور حقیقت معلوم ہو سکے۔ سیمینار میں دو سو سے زائد طلباء اور اسکالرز نے شرکت کی اور مسئلہ فلسطین کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں