64

پاکپتن: مسئلہ کشمیر کے‌حل کے لیے مسلم کب ایک ہوں گے؟؟ حکیم لطف اللہ

پاکپتن (ویڈیو پیغام) مسئلہ کشمیر کے‌حل کے لیے مسلم کب ایک ہوں گے؟ یہ سوال سماجی راہنما حکیم لطف اللہ سیکرٹری جنرل پاکستان سوشل ایسوسی ایشن نے بریلینٹ سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم حکمرانوں سے پوچھا.

ان کا مذید کہنا تھا کہ 1948ء سے جاری مسئلہ فلسطین جاری ہے، اربوں مسلمانوں کے درمیان چند لاکھ یہودی نسل ہا نسل سے مقیم مسلمانوں کو بے گھر کررہے ہیں اور بلااشتعال بمباری کر کے عورتوں اور بچوں سمیت ان مجبور انسانوں کے لاشوں میں تبدیل کررہے ہیں اور ان کی املاک کو ملبہ کے ڈھیر میں تبدیل کررہے ہیں۔ حتی کہ عبادات میں مشغول لوگ، ہسپتال، میڈیا ہاوسز سمیت کچھ بھی محفوظ نہیں۔ مسلمان ممالک ہیں کہ بے پناہ علاقہ، بے پناہ افرادی قوت، بے پناہ وسائل، بے پناہ فوجی طاقت رکھنے کے باوجود بے بس نظر آتے ہیں۔ اپنے اپنے مفاد ات اور ذاتی مخالفتوں کی وجہ سے ایک نہیں ہو پارہے اسی لیے دشمن کو یہ سب کرنے کی ہمت ہورہی ہے۔

فلسطین کی سرزمین پر انسانی خون پانی کی طرح بہایا جارہا ہے، معصوم شیر خوار بچوں کے لاشے گرائے جارہے ہیں ۔ حیرت اس بات کی ہے کہ ایک جانور کے زخمی ہونے یا صرف پریشان ہونے پر تڑپ اٹھنے والی نام نہاد انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں ، اقوام متحدہ تڑپتے انسانی لاشوں پر خاموش ہیں۔ نا جانے کب عالمی ضمیر جاگے گا اور کب مسلم حکمران خواب غفلت سے جاگیں گے ؟ ۔۔۔۔۔۔۔

ویڈیو پیغام کے لیے یہاں کلک کریں

ویڈیو پیغام کے لیے یہاں کلک کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں