55

پاکپتن: 70سال سے کشمیریوں کی نسل در نسل نسل کشی کی جا رہی ہے اور عالمی ادارے خاموش ہیں. حکیم لطف اللہ.

پاکپتن(بیورورپورٹ) دنیا بھر میں کشمیریوں پر ہونے والے مظالم بربریت کرفیو اور انکے بنیادی حقوق غصب کرنے کے سلسلہ میں ہر سال 27 اکتوبر کو یوم سیاہ کے طور پر منایا جاتا ہے اقوام عالم اقوام متحدہ او آئی سی انسانی حقوق کی تنظیمیں خاموش تماشائی ہیں اور 70سال سے کشمیریوں کی نسل در نسل نسل کشی کی جا رہی ہے ان خیالات کا اظہار حکیم لطف اللہ سیکرٹری جنرل پاکستان سوشل ایسوسی ایشن و فوکل پرسن کشمیر فورم پاکپتن میں ریلی سے خطاب کرتے کیا.

You can only have direct referrals after 15 days of being a user and having at least 100 clicks credited

ریلی کی قیادت ڈپٹی کمشنر احمد کمال مان ڈی پی او پاکپتن نجیب الرحمٰن بگوی سی ای او ایجو کیشن راجہ طارق محمود ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر ڈاکٹر محمد اسحاق آسی سرپرست اعلیٰ اتحاد بین المسلمین مولانا سردار علی سردارصدر انجمن تاجران چوہدری اظہر محمود صدر انجمن فلاح مر یضا ں وسیکرٹری جنرل انٹرنیشنل چشتی اتحاد ڈاکٹر شاہد مرتضیٰ چشتی، ضلعی صدر انٹرنیشنل چشتی اتحاد پیر علی مجتبیٰ چشتی، ڈی ایس پی ٹریفک میاں محمد اعجاز ڈھڈی، معروف شاعر کرم علی کیفی اور کثیر تعداد میں شہریوں نے شر کت کی.

سرپرست اعلیٰ اتحاد بین المسلمین مولا نا سردار علی سردارنے کہا کہ جہاں دیگر اقوام بستی ہیں اور جنگل کے جانور پر ظلم بھی عالمی اداروں کو اور حقوق انسانی کے ٹھیکیداروں کو نظر آتے ہیں وہاں کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم نظر کیوں نہیں آ رہے آل پاکستان چشتی اتحاد پیر علی مجتبیٰ چشتی نے کہا کہ عالمی اداروں کو یہ دوہرا معیار ختم کرنا ہوگا ورنہ یہ اعلان کرنا ہوگا کہ یہ ادارے صرف غیر مسلموں اور جانوروں کے حقوق کیلئے ہیں مسلمانوں کیلئے نہیں اور مسلمانوں کو اتفاق کا مظاہرہ کرنا ہو گا پاپولیشن ویلفیئر آ فیسر محمدلطیف بھٹی نے کہا کہ آج بھی کشمیریوں کو قید کیا جارہا ہے وہ گھروں میں بند ہیں کسی بھی قسم کی کوئی آزادی ان کے نصیب میں نہیں ہے اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے انتظار میں بیٹھے ہیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں