199

کراچی: ایم کیو ایم نے وزارت کیوں چھوڑی؟ اصل کہانی سامنے آگئی۔

کراچی (حکیم محمد یوسف سے) ایم کیو ایم نے وزارت کیوں چھوڑی ؟ یہ وہ سوال ہے جو ہر پاکستانی کے دل میں ہے، آئیے ہم آپ کو بتاتے ہیں کہ اصل کہانی ہے کیا؟

You can only have direct referrals after 15 days of being a user and having at least 100 clicks credited
اس خبر کی ویڈیو رپورٹ دیکھنے کے لیے یہاں کلک کریں

ذرائع بتاتے ہیں کہ میئر کراچی کو گرفتاری سے بچانے کیلئے ایم کیو ایم نے یہ ڈرامہ رچایا، زرائع کے مطابق نیب میئر کراچی کے خلاف چھتیس ارب روپے کی کرپشن کی تحقیقات مکمل کرچکا ہے، کے ایم سی افسران کے بیان اور شواہد کی روشنی میں نیب نے میئر کراچی وسیم اختر کو گرفتار کرنے کی تیاری کرلی ہے اور فروری کے پہلے ہفتے میں نیب کراچی چیئرمین نیب سے میئر کراچی کی گرفتاری کی حتمی منظوری لینے والا ہے اور مارچ میں میئر کراچی کو گرفتار کرکے تین ریفرینس دائر کرنے والا تھا، نیب ایکشن کی اطلاع ملنے پر میئر کراچی نے پارٹی قیادت کو آگاہ کیا جس پر ایم کیو ایم نے تین روز قبل ایک اہم اجلاس کرکے فیصلہ کیا کہ ہر صورت میئر کی گرفتاری رکوا ئی جائے اور اس کے لئے “پریشر کارڈ” استعمال کیا جائے.

اگر میئر کراچی کرپشن پر گرفتار ہوئے تو آئندہ بلدیاتی الیکشن میں ایم کیو ایم کی ہار پکی ہے، اس لیے ایم کیو ایم کی قیادت نے فوری طور پر معاملے کو سنجیدہ لیتے ہوئے وزارت چھوڑنے کا پلان تیار کیا. وزارت چھوڑنے کے گیم پلان میں عامر خان، کنور نوید جمیل، فیصل سبزواری اور خواجہ اظہار نے اہم رول ادا کیا، جب کہ نیب نے میئر کراچی کی کرپشن کے تمام شواہد حاصل کرلیئے ہیں ایسے میں ایم کیو ایم وزیر اعظم عمران خان کو دباو میں لاکر میئر کراچی کی گرفتاری رکوانا چاہتی ہے، اور اگر عمران خان دباو میں نہ آئے اور میئر کراچی کی گرفتاری ہوگئی تو ایم کیو ایم وفاقی حکومت پر وزارت چھوڑنے کی بناء پر انتقامی کارروائی کا الزام لگائے گی اور اس طرح اگر میئر کراچی پر کرپشن کا مقدمہ سچا بھی ہے تو بھی ایم کیو اس عمل کے ذریعے سیاسی نقصان کو کم سے کم کرنے پر کامیاب ہوسکتی ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں