222

پاکپتن: بابا فریدٌ کے نام سے فی الفور یونیورسٹی کا قیام عمل میں لایا جائے. مفتی محمد زاہد اسدی

پاکپتن (فیصل عباس سے) بابا فرید الدین مسعود گنج شکر کی والہانہ محبت اس بات کا تقاضا کرتی ہے کہ فی الفور پاکپتن میں بابا فرید یونیورسٹی بنائی جائے ان خیالات کااظہاراتحاد بین المسلمین کے ضلعی صدر مفتی زاہد اسدی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا.

You can only have direct referrals after 15 days of being a user and having at least 100 clicks credited

انہوں نے کہا کہ مسلمانوں نے تعلیم کے بل بوتے پر 700 سال دنیا پر حکمرانی کی ہے تعلیم کے بغیر کوئی قوم ترقی نہیں کرسکتی. شہر فرید میں سرکاری یونیورسٹی کا نہ ہونا لمحہ فکریہ اور غریب طلباء کے ساتھ ناانصافی ہے. طلبہ وطالبات دور دراز علاقوں میں اعلیٰ تعلیم کی غرض جاتے ہیں کئی ذہین طلبہ معاشی پریشانیوں کی وجہ سے تعلیم حاصل نہیں کر سکتے. بھارت میں بابا فرید الدین مسعود گنج شکرکے نام سے یونیورسٹی منسوب ہے جب کہ پاکپتن میں بابافرید الدین مسعود گنج شکرکی درگاہ ہے، وزیراعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے فی الفور یونیورسٹی کے سنگ بنیاد رکھنے کا مطالبہ کرتے ہیں. پاکپتن میں محکمہ اوقاف کا رقبہ موجود ہے، پاکپتن پنجاب کا پسماندہ ضلع ہے مستحق غریب ہزاروں طالب علموں کو دوردراز شہروں میں حصول تعلیم کیلئے جانا پڑتا ہے، جو اس مہنگائی کے دور میں بہت مشکل کام ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں