268

اسلام آباد: آزادی مارچ دھرنا ختم، پلان بی پر عمل درآمد شروع۔

اسلام آباد (خصوصی رپورٹ) آزادی مارچ دھرنا ختم، پلان بی پر عمل درآمد شروع کیے جانے کا اعلان۔

اسلام آباد میں جمعیت علمائے اسلام فضل الرحمن کے احتجاجی دھرنے آزادی مارچ کو ختم کرنے کا اعلان۔ اعلان قائد جمعیت مولانا فضل الرحمن نے کیا۔ دھرنے میں ساتھ دینے اور رہنے والے قائدین اور کارکنان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے مولا نا نے کہا کہ ہم آپ کی جدوجہد کو سلام پیش کرتے ہیں۔ دھرنا ختم اور دھرنے شروع کیے جارہے ہیں۔ پلان بی میں صوبوں کو ملانے والی اہم شاہراہوں کو لاک ڈاون کرنا شامل ہے۔ انہوں نے ہر صورت میں کارکنان کو پرامن رہنے کی تلقین بھی کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اسلام آباد: آزادی مارچ دھرنا ختم، پلان بی پر عمل درآمد شروع۔” ایک تبصرہ

  1. دھرنے دیکر راستے بند کرنے والو مولویو !
    اگر آپ مسلمان ہیں تو اپنی جانوں کو ہلاکت میں مت ڈالو
    اسلام قوانین کا دین ہے، کفر کرنے کی بجائے مومن بنو
    اپنے آپ کو اپنے ہاتھوں سے ہلاکت میں مت ڈالو اور نیکی کرو بے شک اللہ تعالیٰ نیکی کرنے والوں کو پسند فرماتے ہیں۔
    (سورۃ البقرۃ، آیت 195)
    رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کا ارشاد ہے
    کوئی بھی ایسی حرکت جس سے عام لوگ تکلیف میں مبتلا ہو جائیں، از روئے شریعت حرام اور ناجائز ہے۔ مسلمان تو پُر امن ہوتا ہے، دوسروں کے لیے آسانیاں پیدا کرنے والا ہوتا ہے۔ دین اسلام کی تعلیمات میں سے ہے کہ مسلمانوں کو اپنے راستے کشادہ رکھنے چاہئیں۔
    ’’ایک مرتبہ ہم نے حضورﷺ کے ساتھ ایک غزوہ میں شرکت کی۔راستے میں پڑاؤ ہوا تو لوگوں نے خیمے قریب قریب لگا لیے جس سے راستہ تنگ ہوگیا۔اس وقت حضورﷺ نے ایک منادی بھیج کر لوگوں میں اعلان کرایا
    کہ جو شخص راستے میں تنگی پیدا کرے گا
    یا راستہ کاٹے گا تو اس کا جہاد قبول نہیں!‘‘ (سنن ابوداؤد 47/2)
    دیکھیں کہ رسول اللہ صل اللہ علیہ و آلہ و سلم نے راستہ تنگ کرنے یا بند کرنے پر کتنی سخت وعید سنائی ہے اور آپ
    انکے خلاف رات دن لگا کر اپنے آپ کو ہلاک کر رہے ہیں۔ اللہ تعالیٰ سے توبہ کریں اور
    قرآن مجید اور رسول ُاک ﷺ کی تعلیمات پر عمل کر کےدوزغ کی آگ سے بچا لیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں