198

ساہیوال: اداروں میں کام کرنے والی خواتین کو جنسی ہراسانی سے پاک ماحول فراہم کرنا بے حد ضروری ہے، محمد طاہر امین، اے ڈی سی ہیڈ کوارٹر.

ساہیوال (خصو صی رپورٹ) ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ہیڈ کوارٹرز محمد طاہر امین نے کہا ہے کہ اداروں میں کام کرنے والی خواتین کو جنسی ہراسانی سے پاک ماحول فراہم کرنا بے حد ضروری ہے جس سے وہ زیادہ دلجمعی سے اپنے فرائض سر انجام دیں سکے گی اورجنسی ہراسمنٹ ختم کر کے ہی خواتین کو ترقی کے یکساں مواقع فراہم کئے جا سکتے ہیں- وہ یہاں ضلع کونسل ہال میں خواتین ہراسمنٹ کے ایکٹ کے حوالے سے آگہی سیمینار سے خطاب کر رہے تھے-

سیکرٹری خاتون محتسب پنجاب حسین رانا، جوڈیشنل کنسلٹنٹ خاتون محتسب پنجاب اسلم چوہدری، سول ڈیفنس آفیسر فریحہ جعفر سمیت مختلف محکموں کی خواتین کی کثیر تعداد اس موقع پر موجود تھی- سیکرٹری خاتون محتسب پنجاب حسین رانا نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ کسی بھی ملازمت کی جگہ پر خواتین کو باوقار ماحول فراہم کرنا ان کا بنیادی حق ہے اور وہ بے خوف و خطر اپنی ڈیوٹی سر انجام دیں- انہوں نے مزید کہا کہ اگر کسی خاتون کو ہراسمنٹ کے حوالے سے کوئی شکایت ہو تو وہ بذریعہ ڈاک یا ہماری ویب سائٹس پر آن لائن شکایت درج کروا سکتی ہے، صوبے میں جائے ملازمت پر خواتین کو ہراساں کرنے کے خلاف تحفظ ایکٹ 2010 (ترمیم شدہ 2012) نافذ ہے- حسین رانا نے مزید بتایا کہ اس قانون کے تحت تمام سرکاری، نیم سرکاری، رجسٹرڈ غیر سرکاری، نجی ادارے، ہسپتال، کالجز، یونیورسٹیاں اور فیکٹریوں سمیت ہر ادارے میں انکوائری کمیٹی بنانا لازم ہے جس میں کم از کم ایک ممبر خاتون ہو- مجاز اتھارٹی کا تقرر اور اس حوالے سے ضابطہ اخلاق کو اردو یا انگریزی میں نمایاں جگہ پر آویزاں کرنا قانونا لازم ہے- انہوں نے مزید کہا کہ اس ایکٹ کے تحت تمام ملازمت پیشہ خواتین اب بلا خوف و خطر اپنے ڈیوٹیاں سر انجام دے سکیں گی-

جوڈیشنل کنسلٹنٹ خواتین محتسب پنجاب اسلم چوہدری نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ پانچ سالوں میں اب تک 400شکایات درج ہو چکی ہیں جن میں ایک درجن سے زائد گزیٹڈ افسران اور 400سے زائد نان گزیٹڈ افسران کو نوکریوں سے نکالا جا چکا ہے -انہوں نے کہا کہ خلاف ورزی کرنے والے افراد کو جرمانہ،سالانہ ترقی کی ضبطی،عہدے کی تنزلی اور ملازمت سے بر طرفی کی سزائیں دی گئی ہیں -انہوں نے مزید کہا کہ اس سلسلہ میں خواتین میں شعوراجاگر کرنے کے لئے خاتون محتسب صوبے کے تمام اضلاع میں سیمینار منعقد کروا ر ہا ہے تا کہ زیادہ سے زیادہ خواتین کو اس ایکٹ کے بارے میں آگہی دی جا سکے-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں