213

پاکپتن: گورنمنٹ فریدیہ کالج کی زمین پر قبضہ کے خلاف طلبا مشتعل ہو گئے، قبضہ کرنے والے ڈاکٹر کے پرائیویٹ ہسپتال کے شیشے توڑ دیئے. نگینہ چوک پر دھرنا.

پاکپتن (ماجد رضا سے) گورنمنٹ فریدیہ کالج کی زمین پر قبضہ کے خلاف طلبا مشتعل ہو گئے، نگینہ چوک ٹائروں کو آگ لگا کر مظاہرہ کیا، طلبا نے پتھراؤ کرکے قبضہ کرنے والے ڈاکٹر کے پرائیویٹ ہسپتال کے شیشے توڑ دیئے، طلبا کا نگینہ چوک دھرنا، شدید نعرہ بازی، حالات کو کنٹرول کرنے کے لئے ضلع بھر کی پولیس طلب کی گئی.

You can only have direct referrals after 15 days of being a user and having at least 100 clicks credited

پاکپتن گورنمنٹ فریدیہ کالج کی سرکاری زمین پر قبضہ کے خلاف سینکڑوں طلبا مشتعل ہو کر سڑکوں پر نکل آئے، قبضہ مافیا کے خلاف شدید نعرہ بازی کرتے ہوئے نگینہ چوک کو ٹریفک کے لئے بند کر دیا، مشتعل طلبا نے ٹائروں کو آگ لگا دی، مشتعل طلبا نے قبضہ والی دیوار کو گرا کر پتھراؤ کیا، جس سے پرائیویٹ ہسپتال کے شیشے ٹوٹ گئے، مشتعل طلبا کو کنڑول کرنے کے لئے تھانہ سٹی تھانہ فرید نگر تھانہ صدر تین تھانوں کی پولیس کی بھاری نفری موقعہ پر پہنچی، کالج انتظامیہ نے حالات کو کنٹرول کرنے کے لیے طلبا کو نکال کر کالج کے گیٹ بند کر دیئے تاہم نگینہ چوک میں مشتعل طلبا کا دھرنا جاری رہا. انتظامیہ کے خلاف شدید نعرہ بازی جاری رہی، کالج انتظامیہ کا ہنگامی اجلاس منعقد کیا گیا جس میں قبضہ کی شدید مزمت کی گئی، کالج انتظامیہ کا کہنا تھا کالج کی دیوار گرا کر ڈاکٹر احسان نے رات گئے قبضہ کیا، ڈاکٹر کے خلاف فوری کاروائی کی جائے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں