228

پاکپتن: محکمہ اوقاف کی مبینہ ملی بھگت سے دربار بابا فرید پر کرپشن ولوٹ مار کا بازار گرم.

پاکپتن (پیر توقیر سے) محکمہ اوقاف کی مبینہ ملی بھگت سے دربار بابا فرید پر کرپشن عروج پر، پاپوش اسٹینڈ سے لیکر اندرون مزار تک کرپشن کا بازار گرم، اوقاف افسران و ملازمین کی ملی بھگت سے زائرین سے لوٹ مار کے ساتھ ساتھ سرکاری خزانے کو ٹیکہ لگانے کا سلسلہ جاری.

You can only have direct referrals after 15 days of being a user and having at least 100 clicks credited

بتایا گیا ہے کہ برصغیر پاک و ہند کے عظیم روحانی بزرگ حضرت بابا فرید الدین مسعود گنج شکر کے دربار پر ایڈمنسٹریٹر اوقاف اور منیجر اوقاف کی مبینہ ملی بھگت سے کرپشن کا بازار گرم ہوچکا ہے، اوقاف افسران کی ملی بھگت سے پاپوش ٹھیکیدار زائرین سے اوور چارجنگ کررہا ہے، اوقاف ملازمین بہشتی دروازہ کے پاس سلام کروانے کی مد میں زائرین سے پیسے وصول کرتے ہیں اور مزار پر چڑھائی جانے والی چادریں فروخت کردی جاتی ہیں، صوبائی وزیراوقاف کے احکامات کے باوجود بیت الخلاء مفت کرنے کی بجائے زائرین سے پیسے وصول کرنے کا سلسلہ عروج پر ہے، زائرین نے وزیراعظم پاکستان عمران خان، وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار، صوبائی وزیراوقاف و دیگر متعلقہ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ درگاہ بابا فرید کو بھتہ خوری کا مرکز بنانے والے اوقاف افسران و ملازمین کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں