211

پاکپتن: آوارہ کتے نے دوخواتین، ایک بچے سمیت پانچ افراد کو کاٹ لیا، ڈی ایچ کیو ہسپتال مین ویکسین نایاب. ڈپٹی کمشنر کا نوٹس.

پاکپتن (وقار فرید جگنو سے) آوارہ کتے نے دو خواتین، ایک بچے سمیت پانچ افراد کو کاٹ لیا، ڈی ایچ کیو ہسپتال میں ویکسین نایاب ہسپتال انتظامیہ کا موقف دینے سے انکارڈی سی کا نوٹس فارما سسٹ سمیت دو اہلکاروں کو معطل کردیا گیا ہے.

You can only have direct referrals after 15 days of being a user and having at least 100 clicks credited

بتایا گیا ہے کہ پاکپتن کے نواحی گاؤں گوبند پورہ میں آوارہ کتے نے دو خواتین، ایک بچے سمیت پانچ افراد کو کاٹ لیا، متاثرین کو ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال لایا گیا تو کتے کاٹنے کی ویکسین نہ مل سکی، متاثرین کی شناخت محمد خلیل محمد، سلیم وغیرہ کے نام سے ہوئی ہے. متاثرین میں تین سال کا بچہ بھی شامل ہے ورثاء نے الزام عائد کیا کہ انتظامیہ نے انجکشن نہیں لگایا، پھر دھکے بھی دیئے ہیں، مریضوں کی حالت بگڑ رہی ہے، مگر ہسپتال انتظامیہ کچھ نہیں کررہی ہے،

دوسری طرف ڈی ایچ کیو ہسپتال کی ایمرجنسی کے میں دروازوں پر آوارہ کتوں کی بھر مار ہے جس کے باعث مریض خونخوار کتوں کے درمیان سے گزر کر ایمرجنسی میں داخل ہونے پر مجبور ہیں. ہسپتال کی ایمرجنسی میں ویکسین کی عدم دستیابی پر ہسپتال انتظامیہ نے اپنا موقف ریکارڈ کروانے سے انکار کر دیا. واقعہ پر ڈپٹی کمشنر پاکپتن احمد کمال مان نے نوٹس لیتے ہوئے سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر اطہر کی سربراہی میں تحقیقات کی انکوائری کمیٹی تشکیل دے دی، ڈپٹی کمشنر احمد کمال مان نے بتایا کہ افسوسناک واقعہ پر غفلت برتنے پر فارماسسٹ اور سٹور کیپر کو معطل کردیا گیا ہے، انکوائری کمیٹی مزید تحقیقات کررہی ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں