193

ساہیوال: ہم کیا چاہتے، آزادی کے عنوان سے ساہیوال آرٹس کونسل کے زیر اہتمام گورنمنٹ کالج آف کامرس میں ڈرامہ پیش کیا گیا.

ساہیوال (خصوصی رپورٹ) آرٹس کونسل کے زیر اہتمام گورنمنٹ کالج آف کامرس ساہیوال میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے ایک ڈرامہ ’ہم کیا چاہتے، آزادی‘ کے نام سے ڈرامہ پیش کیا گیا، اس ڈرامائی کھیل میں کشمیریوں پر ہونے والے مظالم اور کشمیریوں کی تحریک آزادی کو موثراور فعال انداز میں دکھایا گیا۔

اس تقریب کے مہمان ِ خصوصی تحریک انصاف کے سینئر رہنماشیخ محمد چوہان تھے، جب کہ ڈاکٹر ثمرین واثق ایڈیشنل ڈائریکٹر لائیو سٹاک اور سول ڈیفنس آفیسر فریحہ جعفر نے بطور مہمان اعزاز شرکت کی۔ پروگرام کے میزبانی کے فرائض پرنسپل گورنمنٹ کالج آف کامرس میاں طارق محمود اور پروفیسر مسعود فریدی نے سر انجام دیے۔ شیخ محمد چوہان نے حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر ہماری شہ رگ یعنی زندگی ہے اور ہم اقوام عالم کے ضمیر کو جگانے کے لیے بھارتی مظالم کے خلاف احتجاج کرتے رہیں گے۔ حکومت پاکستان نے عمران خان کے قیادت میں مسئلہ کشمیرکو دنیابھر میں اجاگر کیا اور اب بھارتی بربریت کے خلاف پوری انسانیت سراپا احتجاج ہے۔

پرنسپل میاں طارق محمود نے کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے کہا کہ ظلم کے اندھیرے ختم ہونے لگے ہیں اور بہت جلد کشمیریوں کوآ زادی نصیب ہوگئی۔ ڈائریکٹر ساہیوال آرٹس کونسل ڈاکٹر ریاض ہمدانی نے آرٹس کونسل کے پلیٹ فارم سے کشمیریوں کے جذبہ حق خودارادیت کو مسلسل اجاگر کرنے کا عزم کیا۔طلبہ نے اپنے مابین پاکستان ٹیلی ویثرن کے معروف فنکاروں انجم ملک، ہارون گیلانی، رضوانہ خان، حمید بابر اور نعیم ببا کو دیکھ کر ڈرامہ کو پور ی دلچسپی سے دیکھا اور کالج کا ہال ”ہم کیا چاہتے آزادی“ سے گونجتا رہا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں