187

پاکپتن: گداگری کے خاتمہ کے لیے ضروری ہے کہ گھروں میں شرم کے مارے چھپائے گئے معذور بچوں کو اسپیشل سکولوں میں داخل کروایاجائے. حکیم لطف اللہ.

پاکپتن (ایم نصراللہ سے) گداگری کے خاتمہ کے لئے ضروری ھے کہ گھروں میں شرم کے مارےچھپائے گئے معذور بچوں کو اسپیشل سکولوں میں داخل کرایا جائے، آج والدین ان کی پررورش اور خوراک کا انتظام کررہے ہیں اور کل جب والدین کو سنبھالنے والا اور کوئی نہ ہوگا تو یہ معذور بھیک مانگنے پر مجبور ہونگے ان خیالات کہ اظہار حکیم لطف اللّه سیکرٹری جنرل پاکستان سوشل ایسوسی ایشن نے ڈپٹی کمشنر احمد کمال مان کی زیر صدارت ڈی سی آفس میں منعقدہ میٹنگ میں کیا.

میٹنگ میں افضل بشیر مرزا ڈپٹی ڈائریکٹر سوشل ویلفئیر، منزہ بخاری ایڈووکیٹ سوشل اکٹیوسٹ ودیگر افسران اور سماجی تنظیموں کے عہدیداران نے شرکت کی۔ انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ سال ہماری تنظم PSA اور TB ایسوسی ایشن اور انجمن فلاح مریضاں کی کاوشوں سے 89 بچے اسپیشل سکول میں داخل ہوئے۔ ضرورت اس امر کی ھے کہ جب محکمہ تعلیم بچوں کی داخلہ مہم شروع کرے تو معذور بچوں کو اسپیشل سکول داخل کرایا جائے اور ہیلتھ ورکرز کو بھی پابند کیا جائے کہ وہ معذور بچوں کی نشاندہی کریں اور ان کو سکولوں میں داخل کروائیں اور اگر کسی معاملے میں مشکل پیش آئے تو سماجی تنظیموں کی مدد حاصل کرکے والدین کو موٹی ویٹ کیا جائے، تاکہ کوئی بھی معذور بچہ تعلیم کے زیور سے محروم نہ رہ پائے۔

بھکاریوں کی حوصلہ شکنی کی جائے اور مستحق افراد کو بحالی سینٹرز میں بھیج کر ان کو ملک کہ کارآمد شہری بنایا جائے۔ پیشہ ور نوجوان لڑکیاں بھیک مانگنے کی آڑ میں جسم فروشی اور چوری ڈکیتی جیسے مکروہ دھندے میں ملوث ہیں۔ جرائم، ایڈز اور دیگر موزی بیماریوں میں اضافہ ہو رہا ھے۔ ان پیشہ ور بھکاریوں نے درباروں، مسجدوں اور پبلک مقامات پر شرفا کا جینا حرام کر دیا ھے۔ پیشہ ور بھکاریوں کی حوصلہ شکنی کی جائے اور مجبور لوگوں کو بحال کیا جائے۔ حکومت کو چاہئے کہ گداگری ایکٹ میں ترمیم کرکے اس کی سزا کو مزید بڑھایا جائے اور فوری ضمانت کے عمل کو ختم کیا جائے تاکہ لوگ گداگری کرنے سے پہلے ایک ہزار مرتبہ سوچیں۔ اب قانون کی بےبسی ھے کہ وہ کسی گداگر کو اگر گرفتار کریں تو انکا ٹھیکہ دار رشوت دے کر یا اگلے ہی دن ضمانت کرا کر دوبارہ انہیں اسی کام پر چھوڑ دیتا ھے۔ پاکستان سوشل ایسوسی ایشن گداگری کے خاتمے کے حوالے سے بہت جلد ساتھی تنظیمات کے ساتھ مل کر ریلی اور سیمینارز کا انعقاد کرے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں