204

پاکپتن: اقوام عالم نے مسئلہ کشمیر کو حل نہ کیا تو اس کے نتیجہ میں عالمی امن کسی بھی وقت سبو تاژ ہو سکتا ہے، حکیم لطف اللہ، راہنما کشمیر فورم.

پاکپتن (خرم شہزاد سے) مقبوضہ کشمیر میں مسلط کی گئی تاریک شب جلد چھٹنے والی ہے اقوام عالم نے مسئلہ کشمیر کو حل نہ کیا تو اس کے عالمی امن پر مضر اثرات مرتب ہوں اور عالمی امن کسی بھی وقت سبو تاژ ہو سکتا ہے ان خیالات کا اظہار راہنما کشمیر فورم حکیم لطف اللہ نے یوم سیاہ کے موقع پر کشمیریوں سے اظہاریکجہتی کے لیے نکالی جانیوالی ریلی کے شرکاء سے خطاب کے دوران کیا.

اس موقع پر اتحا د بین المسلمین کے سرپرست اعلیٰ مولانا سردار علی سردار، تحریک اینٹی کرپشن کے بانی میاں عبدالرحمٰن وٹو، انجمن فلاح مریضاں کے صدر ڈاکٹر شاہد مرتضیٰ چشتی، پاکستان طبی کانفرنس کے ضلعی صدر حکیم عبدالمجید شامی، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی سے ڈاکٹر محمد اسحاق آسی، پریس کلب کے اپوزیشن لیڈر رانا مہران، صدر پریس کلب وقار فرید جگنو، چیئرمین بیت المال اختر خان بلوچ، ٹی ایم او پاکپتن نوید سیلانی کی قیادت میں شہریوں، سول سوسائٹی، پی ٹی آئی کے عہدیداران، سیاسی، سماجی وتاجر تنظیموں کے نمائندوں اور شہریوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی. شرکاء نے ریلی میں کشمیر کی آزادی کے سلسلہ میں بینرز، پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے، شرکاء تمام راستے بھارت کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے رہے، ریلی پرانے ریلوے پھاٹک سے شروع ہو کر ساہیوال روڈ سے ہوتی ہوئی نگینہ چوک پر اختتام پذیر ہوئی، اس موقع پر کشمیریوں کی آزادی اور ارض پاک کی ترقی کیلئے خصوصی دعا کی گئی۔ شرکاء کا کہنا تھا کہ ہم اظہار یکجہتی کے لیے یہ سلسلہ جاری رکھیں گے لیکن اب وقت آگیا ہے کہ حکومت وقت آگے بڑھے اور عملی قدم اٹھائے، اس سلسلہ میں اگر ضرورت پڑی تو ہم خون کا آخری قطرہ تک بہا دیں گے. ہم عالمی طاقتوں بالخصوص اقوام متحدہ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ کشمیر کے مسئلے کو سنجیدگی کے ساتھ حل کریں اور کشمیریوں کو حق خوداداریت دینے کیلئے موثر اقدام کریں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں