170

الریاض، سعودی عرب: مدینہ منورہ الہجرہ روڈ پر عمرہ زائرین کی گاڑی کو حادثہ، 10 پاکستانیوں سمیت 35 جان بحق 4 زخمی.

الریاض، سعودی عرب (ناظم علی عطاری سے) مدینہ منورہ الہجرہ روڈ پر عمرہ زائرین کی گاڑی کو حادثہ 10 پاکستانیوں سمیت 35 افراد جاں بحق، 4 زخمی. گورنر ونائب گورنرمدینہ منورہ نے کنگ فہد ہسپتال میں زخمیوں کی عیادت کی.

گورنر مدینہ منورہ شہزادہ فیصل بن سلمان اور نائب گورنر شہزادہ سعود بن خالد الفیصل نے الہجرہ روڈ پر پیش آنے والے ٹریفک حادثے میں زخمیوں کی جمعرات کو عیادت کی۔ بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب عمرہ زائرین کی بس اور گاڑی میں ٹکر کے باعث 10 پاکستانیوں سمیت 35 افراد جاں بحق اور 4 زخمی ہوگئے تھے۔

زخمیوں کا علاج مدینہ منورہ کے کنگ فہد اسپتال میں کیا جارہا ہے۔ شہزادہ فیصل نے زخمیوں سے ان کی خیریت دریافت کی اور ان کے اعزہ کوعلاج کے دوران اسپتال میں رہائش کی سہولت فراہم کرنے کی ہدایت بھی جاری کی۔ اس موقع پر طبی عملے نے زخمیوں کی حالت سے متعلق گورنر مدینہ منورہ کو تفصیل سے بریفنگ دی۔ شہزادہ فیصل بن سلمان نے تاکید کی کہ زخمیوں کے علاج کا مکمل دھیان رکھا جائے او ر ان زخمیوں کو اسپیشلسٹ اسپتال منتقل کردیا جائے جن کے علاج کے لیے خصوصی طبی عملہ اور اسپیشلسٹ مشینیں ضروری ہوں۔ انہوں نے آرزو ظاہر کی کہ اللہ تعالیٰ زخمیوں کو شفائے کامل سے جلد از جلد نوازے۔

مدینہ منورہ کے قریب الہجرہ روڈ پر خوفناک ٹریفک حادثے میں ہلاک شدگان میں 10 پاکستانی عمرہ زائرین تھے جن کی سوختہ لاشیں مردہ خانوں میں منتقل کردی گئی ہیں۔ قونصلیٹ ذرائع کے مطابق حادثے میں شدید زخمی ہونے والے پاکستانی نے بتایا ہے کہ ہم لوگ عمرے کی ادائیگی اور زیارت مسجد نبوی کے لیے ریاض سے روانہ ہوئے ۔ گروپ میں مجھ سمیت 11افرادشامل تھے۔

اب تک حاصل ہونے والی ابتدائی معلومات کے مطابق بس میں لگنے والی آگ سے ہلاک شدگان کی شناخت نہیں ہوسکی۔ اس ضمن میں متعلقہ اداروں کا کہنا ہے کہ نعشوں کی شناخت کا مرحلہ کافی پیچیدہ ہوچکا ہے۔ واقعہ کی تحقیقات بڑے پیمانے پر جاری ہے۔ دریں اثناءقونصلیٹ کی جانب سے ابتدائی ٹیم مدینہ منورہ ریجن کے الحمنہ اسپتال اور کنگ فہد اسپتال روانہ کردی گئی جو ہلاک شدگان کے بارے میں تفصیلات جمع کررہے ہیں۔

مدینہ منورہ پولیس ترجمان کے حوالے سے بتایاہے مدینہ منورہ کے قریب ایک نجی بس اور ہیوی لوڈر کے درمیان تصادم میں 35 افراد ہلاک ہوئے۔ حادثے کی اطلاع ملتے ہی قریبی ہسپتالوں میں ہنگامی صورتحال کا اعلان کردیا گیا تھا۔ لاشوں اور زخمیو ں کی منتقلی کا کام ٹریفک ٹیموں اور روڈ سیکیورٹی فورس کے دستوں نے انجام دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں