196

ساہیوال: 6 ستمبر 1965ء (یوم دفاع/فاتح پاکستان) وطن عزیزکی تاریخ میں سنہری اور یادگار دن کی حیثیت رکھتا ہے۔ پریس کلب کے زیر اہتمام ریلی سے مقررین کا خطاب.

ساہیوال (خصوصی رپورٹ) ساہیوال پریس کلب رجسٹرڈساہیوال کے زیراہتمام یوم دفاع، فاتح پاکستان کے موقع پر ایک عظیم الشان ریلی نکالی گئی جس میں سینئرصحافی پیرسید طمطراق محاسن شاہی، راناوحید، عمر منظورچوہدری، ملک دلاورسلطان ڈھکو‘ تاجررہنماء شیخ نعمان‘ ملک غلام عباس گوہر‘ امتیازبٹ‘ راؤ عتیق احمد‘ ملک اسلم کھوکھر‘ ملک آصف نوازاعوان‘ میاں شبیراحمدچٹھہ‘ حاجی لیاقت علی‘ گلفام حیدرقریشی‘ شاکرہاشمی‘ عبدالوہاب‘ شکیل شاہ‘ محمدعدنان‘ ذاکرکھوکھر‘ رؤف جٹ‘ شافن شاہی‘ ملک محبوب عالم‘ نورحسن وکی‘ مصطفی بھٹی‘ محمدزنیر‘ مہرامتیازساہمل ایڈووکیٹ ودیگرنے شرکت کی۔

ریلی کے شرکاء خطاب کرتے ہوئے سینئرصحافی پیرسیدطمطراق محاسن شاہی، راناوحید، عمر منظورچوہدری اورملک دلاورسلطان ڈھکو نے کہا کہ 6 ستمبر 1965ء (یوم دفاع/فاتح پاکستان) وطن عزیزکی تاریخ میں سنہری اور یادگار دن کی حیثیت رکھتا ہے۔ پوری قوم پاک فوج کے شہدأ کو سلام پیش کرتی ہے۔ افواج پاکستان نے تاریخ کے ہر نازک موڑ پر ملک کی جغرافیائی سرحدوں کا دلیری سے دفاع کیا ہے۔ آج پھر ہماری قوم کو 1965ء والے قومی جذبہ کی ضرورت ہے تاکہ وہ اپنے ملک اور قوم پر پڑنے والی ہر بری نظر کا ڈٹ کر مقابلہ کرسکے اور دشمنوں کو منہ توڑ جواب دے سکے۔ انہوں نے کہا کہ کم عددی حیثیت اور کم جنگی وسائل کے باوجود اپنے سے دس گنا بڑی فوج کومیدان جنگ میں زیر کرنا صر ف اور صرف پاکستانی افواج ہی کا کمال تھا۔ قبل ازیں ریلی پریس کلب سے شروع ہوئی جومختلف بازاروں سے ہوتی ہوئی کیپٹن محمدعثمان علی شہیدکے مزار پر پہنچ کر اختتام پذیرہوئی۔ مزارپرپھولوں کی چادربھی چڑھائی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں