224

پاکپتن: محکمہ اوقاف کی ملی بھگت سے دربار بابا فرید پر لوٹ مار کا بازار گرم، پاپوش سٹینڈ پر اوور چارجنگ کا سلسلہ جاری.

پاکپتن (ڈاکٹر عبدالرووف سے) محکمہ اوقاف کی ملی بھگت سے دربار بابا فرید پر لوٹ مار کا بازار گرم پاپوش اسٹینڈ پر زائرین سے اوور چارجنگ جاری دربار پر موجود پولیس اہلکارپاپوش ٹھیکیدار اپنا حصہ وصول کر نے لگے.

تفصیلات کے مطابق برصغیرپاک و ہند کے عظیم روحانی بزرگ و پنجابی زبان کے پہلے صوفی شاعر حضرت بابا فرید کے 777 ویں سالانہ عرس مبارک کی تقریبات جاری ہیں، اندرون و بیرون ملک سے لاکھوں زائرین و عقیدت مند عرس تقریبات میں شرکت کیلئے پاکپتن پہنچ رہے ہیں، مگر محکمہ اوقاف کی جانب سے ناقص انتظامات کی وجہ سے زائرین کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے، وزیر اوقاف کی جانب سے بیت الخلاء مفت کرنے کا اعلان صرف اعلان کی حد تک محدود ہے.

زائرین نے بتایا کہ دربار کی سیڑھیوں سے ہی محکمہ اوقاف کی کرپشن کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے، پاپوش اسٹینڈ پر جوتا رکھنے پر 20سے 30روپے وصول کر رہا ہے یہی صورتحال دربار خواجہ عزیز مکی کی بھی ہے دربار بابا فرید کے بیت الخلاء استعمال کرنے پر زبردستی پیسے وصول کئے جاتے ہیں، نہ دینے پر بدتمیزی کی جاتی ہے اور زائرین کا سامان چھین لیا جاتا ہے، شکایت کرنے پر پولیس اہلکار شکایت کنندہ کو حوالات میں بند کر دیتے ہیں. جس کا تازہ واقع گزشتہ روز ہوا زائرین نے بتایا کہ محکمہ اوقاف کی جانب سے پنکھوں اور پینے کا ٹھنڈا پانی کا مناسب انتظام نہ ہے زائرین نے کہا کہ محکمہ اوقاف کروڑوں روپے کی آمدن کے باوجود سہولیات نہیں دے رہا جو انتہائی قابل مذمت اور شرمناک فعل ہے اعلی حکام نوٹس لیکر کاروائی کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں