211

پاکپتن: تعلیمی اداروں اور ان کے گردونواح منشیات فروشوں کے خلاف آپریشن کا آغاز خوش آئند ہے. حکیم لطف اللہ.

پاکپتن (خرم شہزاد سے) تعلیمی اداروں اور ان کے گردونواح منشیات فروشوں کے خلاف آپریشن کا آغاز خوش آئند ہے. منشیات کیخلاف آئی جی پنجاب عارف نواز خان کی طرف سے اٹھائے گئے اقدام بہت احسن ہیں اسکو بہت پہلے شروع ہو جانا چاہئے تھا ہمارے ملک کا مستقبل %63 نوجوان نشہ کی لت میں مبتلا ہے تعلیمی ادارے کیا اب تو وطن عزیز کا ہر گاؤں نشہ بیچنے اور کرنے والوں کی آماجگاہ بن چکا ہے ان خیالات کا اظہار حکیم لطف اللہ سیکرٹری جنرل پاکستان سوشل ایسوسی ایشن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا.

انہوں نے کہا کہ کوئی خاندان اس سے محفوظ نہیں ہر گلی میں درجنوں نوجوان اس لت میں مبتلا ہیں پولیس کی پکڑ دھکڑ میں کلو گراموں میں پکڑی جانیوالی منشیات کا صرف چند گراموں میں FIR ہونا ایک لمحہ فکریہ ہے ہر ضلع میں ڈی سی او اور ڈی پی او صاحبCEOہیلتھ اور CEO ایجوکیشن کی نگرانی میں ٹاسک فورس قائم کی جائیں سکول کالجز یونیورسٹی کیمپس یونین کونسل اور گاؤں و محلہ کی سطح پر کمیٹیاں قائم کی جائیں نوجوان ہمارے ملک کا قیمتی اثاثہ ہیں انکو بچانا ہم سب کی ذمہ داری ہے اس مشن میں والدین کو بھی اپنا کردار ادا کرتے ہوئے اپنی اولاد پر نظر رکھنے کی ضرورت ہے۔نشہ کی لعنت سے نوجوانوں کو بچانے کے لئے سماجی تنظیموں سے بھرپور فائدہ لیا جا سکتا ہے۔عوام کو آگاہی دینے کیلئے سوشل میڈیا،پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا پر پروگرامز اور سیمینارز اور کانفرنسسز کا سلسلہ شروع کرنے کی ضرورت ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں