208

پاکپتن: وطن عزیز کے شہدا ہمارا فخر اور سرمایہ حیات ہیں، حکیم لطف اللہ.

پاکپتن (مقبول حسین سے) شہید کی جو موت ہے وہ قوم کی حیات ہے، شہدا کی قربانیاں کبھی بھی رائیگاں نہیں جائیں گی، ارض پاک کی بنیادوں میں شہدا کا خون شامل ہے، وطن عزیز کے بیٹوں نے ہر کڑے حالات کا جس طرح جوانمردی سے مقابلہ کیا ہے اس کی دنیا میں مثل نہیں، شہدا کے خاندانوں کی فلاح بہبو د کیلئے ہر ممکن اقدامات کیے جائیں اور انہیں تحفظ فراہم کرنے کیلئے کو ئی دقیقیہ فرو گذاشت نہیں کیا جائے گا، وطن عزیز کے شہدا ہمارا فخر اور سرمایہ حیات ہیں ان خیالات کا اظہارپاکستان سوشل ایسوسی ایشن کے مرکزی سیکرٹری جنرل حکیم لطف اللہ نے مختلف سماجی تنظیموں کی جانب سے یوم دفاع کے موقع پر نکالی گئی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا.

ریلی سے ڈپٹی ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر افضل بشیر مرزا، بار ایسوسی ایشن کے صدر راؤ محمد اکرم ایڈوکیٹ، پریس کلب پاکپتن کے صدر وقارفرید جگنو، انجمن فلاح مریضاں کے صدر ڈاکٹر شاہد مرتضی چشتی، ہیومن رائٹس سوسائٹی کے سیکرٹری اطلاعات راؤ مبشر علی خاں، صفدر علی صفی، صحابی رسول خواجہ عبدالعزیز مکی کے سجادہ نشین دیوان ساجد مشتاق چشتی، تحریک اینٹی کرپشن کے بانی میاں عبدالرحمن وٹو، راجپوت ایسوسی ایشن کے صدر سرپرست اعلیٰ حاجی محمد اشرف، جماعت اسلامی کے رہنما ڈاکٹر شوکت بھٹی، راؤ عظمت اللہ، مولانا سردا ر علی سردار، ملک فاروق نومی ایڈوکیٹ، عوامی ورکرز پارٹی کے صدر رانا اورنگ زیب عالمگیرنے بھی خطاب کیا مقررین نے کہا کہ شہید کا بہت بڑا رتبہ ہے، شہید کبھی مرتے نہیں زندہ ہیں، انہوں نے کہا کہ وطن عزیز کو امن کا گہوارہ اور ترقی یافتہ بنانے کیلئے ہم سب کو مل جل کر کام کرنا ہوگا، جس مقصدکیلئے شہد انے اپنی قیمتی جانوں کا نظرانہ دیا ہے اور یکجان ہوکر یکسوئی کے ساتھ اس مقصد کو حا صل کرنے کیلئے جستجو کرنا ہے، ہمیں اپنے مقصد کو حا صل کرنے کیلئے شہدا کی طرز پر عملی طور پر جدو جہد کرنا ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں