229

نوشہرو فیروز: عشرہ محرم الحرام سے ہمیں صبر کا درس ملتا ہے۔ کیپٹن ریٹائرڈ بلال شاہد راو، ڈپٹی کمشنر۔

نوشہروفیروز (ملک مشتاق احمد) ڈپٹی کمشنر کیپٹن ریٹائرڈ بلال شاہد راؤ کی زیر صدارت محرم الحرم کے دوران امن وامان، مذہبی ہم آہنگی اور عشرہ محرم کے انتظامات کے سلسلے میں ایک اجلاس منعقد ہوا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ عشرہ محرم تمام مسلمانوں کے لئے اہم ہے اس کے دوران تمام مسالک میں مذہبی ہم آہنگی قائم کی جائے عشرہ محرم سے ہمیں صبر کا درس ملتا ہے اس لئے ہم سب کو صبر سے کام لینا چاہیے۔ ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ ضلع میں 98 مجالس، 103 ماتمی جلوس ، اور 11 بڑے جلوس نکلتے ہیں۔ ماتمی جلوسوں اور مجالس کے دوران سیکورٹی فراہم کرنے کے لئے 3000 سے زائد پولیس اہلکار اور اس کے علاوہ رینجرز، آرمی اور دیگر سیکورٹی فراہم کرنے والے اداروں کے اہلکار موجو د ہوں گی۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ عشرہ محرم کے دوران ڈپٹی کمشنر آفس میں کنٹرول روم قائم کیا جائے گا اس کے علاوہ تمام تحصیلوں میں کنٹرول روم قائم کئے جائیں گے اور تحصیل کی سطح پر امن کمیٹیاں تشکیل دی جائیں گی۔

انہوں نے کہا کہ محکمہ داخلہ کی جانب سے جاری کئے گئے ضابطہ اخلاق پر عمل درآمد کرنا تمام شہریوں اور افسران پر فرض ہے۔ کسی کو بھی شرانگیزی کرنے کی اجازت ہر گز نہیں دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ کسی کو بھی نیا روٹ پرمٹ جاری نہیں ہوگا۔ عشرے کے دوران اسلحہ ساتھ رکھنے کی ممانعت ہے۔ کسی کو بھی شرا نگیز وال چاکنگ کرنے کی اجازت نہیں ہے۔ تمام آڈیو ویڈیو اور لائوڈ اسپیکر ایکٹ پر عمل درآمد لازمی کیا جائے۔ میڈیا سے منسلک افراد کسی بھی خبر کو جاری کرنے سے پہلے تصدیق کرلیں۔ غیر ذمہ دار رپورٹنگ سے اجتناب برتا جائے۔ ڈپٹی کمشنر نے محکمہ صحت کے افسران کو ہدایات دیں کہ ایمبولینس، ڈاکٹر، پیرامیڈیکل عملے سمیت ادویات کا بندوبست کیا جائے۔

میونسپل اور ٹاؤن کمیٹیوں کے افسران مجالس اور ماتمی جلوسوں کے روٹ پر صفائی ستھرائی اور روشنی کے انتظامات کریں۔ سیپکو افسران بجلی کے تاروں کے اوپر کریں اور نویں اور دسویں محرم کے دوران لوڈ شیڈنگ نہ کی جائے۔ تمام ٹاؤن افسران فائر برگیڈ کو تیارکھیں، ڈی واٹرینگ مشین کو چالو اور فیول کا انتظام مکمل رکھا جائے۔ ماتمی جلوس کے راستوں پر سے تعمیراتی سامان ہٹایا جائے۔ اس موقع پر رنیجرز کے ڈی ایس آر عبدالوحید، عبدالرحمن ڈنگراج، سید نوید شاہ، سید حماد اللہ شاہ، سید احمد شاہ، سید کاظم شاہ، سید اختیار علی نقوی اور دیگر علمائے کرام نے اپنے مسائل سے آگاہ کیا اور اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں