207

ساہیوال: موحولیاتی آلودگی میں کمی اور دنیا کو انسانوں کے رہنے کے قابل بنانا ہم سب کی ذمہ داری ہے. پروفیسر ڈاکٹر سلیم فاروق شوکت.

ساہیوال (خصوصی رپورٹ) قدرت کے بچاؤ اور تحفظ کے لیے ہمیں بھرپور کوشش کرنی ہے، یہ اداروں کے ساتھ ساتھ عوام کا بھی فرض ہے کہ وہ ماحولیاتی آلودگی کی کمی اور اسے انسانوں کے رہنے کے قابل بنائے رکھنے کے لیے اقدامات کریں۔ یہ بات پروفیسر ڈاکٹر سلیم فاروق شوکت نے کامسیٹس یونیورسٹی اسلام آباد، ساہیوال کیمپس میں ”پلانٹ فار پاکستان” کے تحت شجرکاری مہم کا آغاز کرتے ہوئے کہی۔

ان کا کہنا تھا کہ کامسیٹس یونیورسٹی اسلام آباد، ساہیوال کیمپس کو قدرتی ماحول سے نزدیک ترین رکھنے کے لیے کیمپس کو کلین اور گرین رکھا جاتا ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر سلیم فاروق شوکت نے بتایا کہ گذشتہ سالوں کی طرح امسال بھی کامسیٹس یونیورسٹی میں حکومتی اقدامات کو آگے بڑھاتے ہوئے بڑی تعداد میں شجر کاری کی جائے گی۔ کلین گرین پاکستان اور پلانٹ فار پاکستان کے حوالے سے کیمپس میں آگاہی واک کا اہتمام بھی کیا گیا۔ اس شجرکاری مہم میں رہنما تحریکِ انصاف بابر صغیر، ڈائریکٹر پبلک ریلیشن عقیل اشفاق، ڈائریکٹر آرٹس کونسل ڈاکٹر ریاض ہمدانی، چیمبر آف کامرس کے نمائندگان میاں احمد سعید، احمد قیوم، ہیڈ،انچاج آف ڈیپاٹمنٹس و فکیلٹی ممبران ڈاکٹر ارسلان احمد، ڈاکٹر جاوید فرزند، رانا عدیل عباد، ڈاکٹر اسرارالحق، یوسف مشتاق، ڈاکٹر شاہد قیصر، آصف عمران شاہ، محمد اسحاق، ڈاکٹر ماجدحسین، زاہد شیرازی، افسران، سٹاف اور طلبا و طالبات کی بڑی تعداد نے پودے لگائے۔

ڈپٹی رجسٹرار صفدر علی نے میڈیا نمائندگان سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ پچھلے سال شجرکاری مہم کے دوران آم، مورنگا، شیشم، بکائین، گلِ نشتر، زنیوبیہ، جامن، کیکر، سنبل، پاپولر سمیت 10ہزار سے زائد پودے لگائے گئے۔ انہوں نے بتایا کہ اس دوران ناصرف کیمپس میں بلکہ برلبِ نہر بھی 4 ہزار پودے لگائے گئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ کیمپس کے ہارٹیکلچرل ڈیپارٹمنٹ کے ذریعے ان پودے کی مسلسل دیکھ بھال کی جاتی ہے تاکہ آنے والی نسل کو بہتر مستقبل فراہم کیا جا سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں