195

ساہیوال: پولیس نے ہڑپہ میں خواجہ سرا وں کے دوہرے اندھے قتل کا ملزم 48 گھنٹے میں ٹریس کرلیا، ملزم آلہ قتل سمیت گرفتا.

ساہیوال (خصوصی رپورٹ) ساہیوال پولیس نے خواجہ سراوں کے دوہرے اندھے قتل کی سنگین واردات 48 گھنٹے کے اندر ٹریس کرکے ملزم کو آلہ قتل سمیت گرفتارکرلیا۔ واقعہ کا وزیراعلیٰ پنجاب نے نوٹس لیکر72 گھنٹوں میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیاتھا۔ ڈی پی او، ایس پی انوسٹی گیشن خود نگرانی کرتے رہے، افسروں کی بہترین حکمت عملی کے باعث 48 گھنٹوں کے اندرہی دوہرے اندھے قتل کاسراغ لگا لیا گیا۔

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرکیپٹن ریٹائرڈ محمد علی ضیاء نے ایس پی انوسٹی گیشن شاہدہ نورین کے ہمراہ پولیس لائن میں ایک پرہجوم پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایاکہ جناح ٹاؤن ہڑپہ میں گزشتہ شب دوخواجہ سراوں سلمان عرف مسکان اوراشفاق عرف نادیہ کے اندھے قتل کی اطلاع ملی جس پر میں خود اورایس پی انوسٹی گیشن شاہدہ نورین سمیت دیگرمتعلقہ افسران موقع پرپہنچے۔ جائے وقوعہ کو مکمل سیل کیاگیا۔ انہوں نے بتایاکہ ایس ڈی پی اوصدرسرکل فلک شیربھٹی کی سربراہی میں ایس ایچ اوتھانہ ہڑپہ ذیشان بشیر ڈوگر، سب انسپکٹرفیاض احمد، اے ایس آئی امجد حسین، ہیڈ کانسٹیبل ناظم علی اورکانسٹیبل نذرمحمدپرمشتمل ایک خصوصی تفتیشی ٹیم تشکیل دی گئی جس نے شب وروز محنت کرکے جدید سائینٹفک طریقہ تفتیش سے دوہرے اندھے قتل کے ملزم زبیر اسلم کو 48 گھنٹے کے اندراندر ٹریس کرکے آلہ قتل بھی برآمد کر لیا۔ انہوں نے بتایاکہ گرفتار ملزم زبیر اسلم ڈیرہ رحیم ساہیوال کارہائشی ہے جو حمزہ شوگر ملز جٹھہ بٹھہ رحیم یار خان میں بطور الیکٹریشن کام کرتا ہے۔ ملزم کا خواجہ سراء سلمان عرف مسکان سے عرصہ تقریبا 8/9 ماہ سے تعلق تھا۔ ملزم زبیر اسلم مقتول سلمان عرف مسکان کو دوسرے لوگوں سے تعلق رکھنے سے منع کر تا تھا اس بات پر دونوں میں اکثر لڑائی جھگڑا رہتا تھا۔ ملزم 24.07.19 کوشوگر ملز سے چھٹی لیکر آیا اور اس نے روانہ ہونے سے پہلے مسکان سے رابطہ کیا کہ میں آرہا ہوں۔ ملزم نے نہایت چالاکی سے تفتیش کا رخ بدلنے کے لیے اپنا موبائل فون چیچہ وطنی کے قریب پہنچ کر بند کردیااور رات ہڑپہ اسٹیشن مسکان کے گھر آگیا۔ انہوں نے کہاکہ ملزم زبیر اسلم کے خلاف قبل ازیں مقدمہ نمبر 600/17 بجرم 302 ت پ تھانہ غلہ منڈی میں درج ہے جس کے سلسلہ میں اگلی صبح اپنی تاریخ پیشی پر عدالت میں پیش ہونا تھاجوکہ پیش نہ ہوا اس بات پر بھی آپس میں جھگڑا ہوا۔ اس دوران ملزم مسکان کے گھر میں ہی قیام پذیر رہا۔ تقریبا 3/4 بجے کے قریب خواجہ سراء اشفاق عرف نادیہ کسی کام کے سلسلے میں گھر سے باہر گیا اور مسکان باتھ روم میں کپڑے دھونے کی غرض سے چلا گیا۔ ملزم بھی اس کے پیچھے پیچھے پسٹل لے کر باتھ روم میں چلا گیا اور مسکان کے ساتھ باتیں شروع کردیں دوران گفتگو ملزم نے پسٹل نکالا اور مسکان کی کنپٹی پر رکھ کر گولی چلادی۔کچھ دیر کے بعد اشفاق عرف نادیہ بھی واپس آگیا اور مسکان کے بارہ میں پوچھاجس پر ملزم نے بتلایا کہ وہ باتھ روم میں ہے۔ اشفاق عرف نادیہ نے مسکان کو آوازیں دینا شروع کردیں اور باتھ روم میں مسکان کو دیکھنے گیا توملزم بھی اس کے پیچھے پیچھے گیا جیسے ہی اشفاق نے واش روم کا دروازہ کھولنے کے لیے ہاتھ بڑھایا تو ملزم نے پسٹل نکال کر اشفاق عرف نادیہ کی کنپٹی پر بھی فائر کر کے اس کو موت کے گھاٹ اتاردیا۔ اس کے بعد ملزم نے آلہ قتل پسٹل 30بور، ٹراوزر میں لپیٹ کر نائیوالہ روڈ کے قریب ایک گندے نالے میں پھینک دیا اور وہاں سے گاڑی میں سوار ہوکر شو گر ملز خانپورضلع رحیم یار خان کے لیے روانہ ہوگیا۔ انہوں نے کہاکہ ملزم کو جدید سائینٹفک طریقہ تفتیش کے ذریعے گرفتارکرکے آلہ قتل بھی برآمد کرلیا گیا۔ ڈی پی اونے پولیس ٹیم کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے انہیں تعریفی اسناددینے کابھی اعلان کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں