203

ساہیوال: ظلم استبداد کے سائے میں انسانی حقوق کو زیادہ دیر تک پا مال نہیں رکھا جا سکتا، یوم سیاہ کے موقع پر ریلی سے مقررین کا خطاب

ساہیوال (خصوصی رپورٹ) کشمیریوں پر ظلم و ستم روا رکھنے اور ان پر غاصبانہ بھارتی قبضے کے خلاف پورے ملک کی طرح ساہیوال میں بھی یوم سیاہ منایا گیا ۔سرکاری دفاتر پر قومی پرچم سرنگوں رکھا گیا اور سول سوسائٹی، سیاسی و سماجی تنظیموں کے اراکین، صحافیوں اور عام شہریوں نے بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر احتجاج ریکارڈ کروایا۔ یوم سیاہ کی مناسبت سے جوگی چوک سے صدر بازار تک احتجاجی ریلی نکالی گئی جس میں کمشنر ندیم الرحمٰن، ڈپٹی کمشنر محمد زمان وٹو، اسسٹنٹ کمشنر محمد سیف، سی ای او ایجوکیشن سجاد اسلم، بشپ آف ساہیوال ابراہم عظیم ڈینیل، چیف آفیسر میونسپل کارپوریشن عبدالستار، سول سوسائٹی کے سرگرم رہنما شیخ اعجاز احمد رضااور شہریوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ شرکاء نے بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر بھارتی غاصبانہ قبضے کے خلاف مختلف نعرے درج تھے۔ ریلی کے صدر بازار چوک پہنچنے پر خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ ظلم استبداد کے سائے میں انسانی حقوق کو زیادہ دیر تک پا مال نہیں رکھا جا سکتا اور وہ دن دور نہیں جب اقوام عالم کا ضمیر جاگے گا اور کشمیری بھارتی چنگل سے آزاد ہو کر اپنا خود ارادیت کا حق حاصل کر لیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کا ہر جوان، بوڑھا، مرد و عورت اور بچہ کشمیریوں کے ساتھ ہے اور ان کی جدوجہد آزادی میں تن من دھن سے ہر قربانی دینے کیلئے تیار رہے گا۔ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے بشپ آف ساہیوال ابراہم عظیم ڈینیل نے کہا کہ مسیحی برادری اپنے مسلمان بھائیوں کے ساتھ کشمیریوں کی جدوجہد آزادی میں ہراول دستے کا کردار ادا کر رہی ہے اور اسے اپنا مذہبی و ملی فریضہ سمجھ کر مظلوموں کے ساتھ کھڑی ہے۔ اختتام پر ریلی کے شرکا نے بھارتی ظلم و جبر کے خلاف شدید نعرہ بازی بھی کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں