204

لاہور/ کراچی / اسلام آباد / کوئٹہ / سوات / پاکپتن: ٹیکسوں کیخلاف آج شٹر ڈاؤن ہڑتال، 90 فیصد سے زائد مارکیٹس بند، جبکہ بعض تاجر تنظیموں کا اظہار لاتعلقی

لاہور/ کراچی / اسلام آباد / کوئٹہ / سوات / پاکپتن (بریلینٹ رپورٹرز/ بیوروچیفس) تاجر تنظیموں کی طرف سے آج ملک گیرشٹرڈاؤن ہڑتال کی کال پر لاہور، کراچی، اسلام آباد، کوئٹہ، سوات، ملتان، ساہیوال، پاکپتن سمیت اکثر بڑے شہروں اور قصبات میں مکمل شٹر ڈاون ہڑتال کی گئی، جبکہ بعض تاجر تنظیموں نے ہڑتال سے اعلان لاتعلقی کا اظہار کر رکھا تھا. ہمارے نمائندگان کے مطابق ملک بھر میں 90 فیصد سے زائد دکانیں، منڈیاں، شاپنگ مال، بازار، مارکیٹس اور دکانیں سارا دن بند رہیں تاہم بعض مقابات پر اکا دکا دکانیں کھلی ہوئی بھی نظر آئیں، تاہم کسی بھی علاقے سے مارکیٹس، دکانیں اور کاروبار زبردستی بند کروانے کی اطلاعات تاحال موصول نہیں ہوئیں ہیں. تاجران کا کہنا ہے کہ اپنے حقوق کے حصول کے لیے ہم آخری حد تک جائیں گے. تاجروں کا کہنا تھا کہ ہم ٹیکس پہلے بھی دے رہے ہیں اور آئندہ بھی دینے کا عزم اور ارادہ رکھتے ہیں اور سمجھتے ہیں کہ ملک کی تعمیر وترقی کے لیے یہ ضروری ہے تاہم جب ہماری استطاعت سے زائد بوجھ ڈالا جائے کہ ہم جسے اٹھا نا سکیں تو پھر ہماری چیخ وپکار مجبوری ہے. ریاست ایک ماں کا درجہ رکھتی ہے جب کہ موجودہ حالات میں آئی ایم ایف کے زیر تیار ہونے والا بجٹ اور بلا جواز اور ہوش ربا ٹیکسز ظلم کے مترادف ہے اور ہمیں چور سمجھا جارہا ہے بے شمار ڈائریکٹ اور انڈائریکٹ ٹیکسز اور اس پر ایف بی آر کے اہلکاروں کی طرف سے تنگ کرنا اور بلیک میلنگ جیہسے واقعات ہمیں مجبور کررہے ہیں کہ ہم احتجاج کریں. اگر حکومت نے ہماری اشک شوی نہ کی تو پھر ہماری یہ تحریک حکومت گراو تحریک میں بھی تبدیل ہوسکتی ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں