221

منڈی صادق گنج: محکمہ سو سالہ قدیمی راستہ واگزارنہ کرا سکا، قیمتی اراضی قبضہ مافیا کے شکنجے میں.

منڈی صادق گنج (سیدعاصم رضا) سو سالہ قدیمی راستہ محکمہ مال واگزارنہ کرا سکا، قیمتی اراضی تاحال قبضہ مافیا کے شکنجے میں، مال افسران کی جھوٹی رپورٹس پر لئے گئے سٹے آرڈرز بھی خارج ہو چکے، سرکل آفیسر اینٹی کرپشن بھی اس جگہ کا دورہ کر چکے ہیں، سرکاری اراضی پر بنائی گئی عمارات کاسیل ہونے کے باوجود استعمال جاری، ڈپٹی کمشنر بہاول نگر اور کمشنر بہاول پورنوٹس لیں.

تفصیلات کے مطابق منڈی صادق گنج میں مین روڈ پر واقع کروڑوں روپے مالیت کی کئی کنال سرکاری اراضی جو کہ مین روڈ پر واقع ہونے کے باعث کمرشل حیثیت اختیار کر چکی ہے جس کے باعث یہ اراضی انتہائی قیمتی ہو گئی ہے۔ محکمہ مال کے افسران اور اہلکاران کی ملی بھگت سے قبضہ مافیا نے اس سرکاری سو سالہ قدیمی راستہ پر قبضہ کر کے عمارات بنائیں جس پر شہریوں کی جانب سے شکایات اور درخواستوں پر یہ افسران اور اہلکاران یہ جعلی رپورٹس پیش کر دیتے ہیں۔ دو سال قبل اسسٹنٹ کمشنر منچن آباد نے سرکاری راستہ پر بنائی جانے والی دوکانوں کو سیل بھی کیا لیکن قبضہ مافیا نے پیچھے سے دروازے بنا کر اس کا استعمال جاری رکھا۔ بعد ازاں محکمہ مال کے افسران اور اہلکاران کی ملی بھگت سے مقامی عدالتوں سے سٹے آرڈرز لئے جو کئی ماہ سے خارج ہو چکے ہیں اس کے باوجود انتظامیہ قبضہ مافیا سے سو سالہ قدیمی راستہ واگزار نہ کروا سکی۔ شیخ رزاق، غفار عباسی، محمد احمد و دیگر کا کہنا ہے کہ ڈپٹی کمشنر بہاول نگر اور کمشنر بہاول پور اس پر فوری نوٹس لیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں