217

انتخابی اصلاحات کیلئے سنجوک نے الیکشن کمیشن کو خط لکھ دیا، کروڑ پتی اور ارب پتی نمائندے عوام کے ہمدرد نہیں ہو سکتے،اصلاحات کی جائیں ،خط کا متن

لاہور (اسد الیاس سے) سماجی تنظیم سنجوک نے انتخابی اصلاحات کیلئے الیکشن کمیشن کو خط لکھ دیا۔ ملک میں اینٹی سٹیٹس کو، انتخابی اصلاحات کے ساتھ ساتھ ملک کے غریب اور سفید پوش طبقات کی سیاسی وجمہوری نظام میں شمولیت کیلئے کام کرنے والی تنظیم سنجوک کی طرف سے الیکشن کمیشن کو لکھے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ کروڑ پتی اور ارب پتی نمائندے عوام کے ہمدرد نہیں ہو سکتے، جس کی وجہ سے عوام کے مسائل میں اضافہ ہو رہا ہے۔ خط میں لکھا گیا کہ گزشتہ دنوں الیکشن کمیشن کی جانب سے قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے ارکان کے اثاثہ جات کی لسٹ جاری کی گئی۔ اس فہرست کے مطابق چند ایک کے علاوہ اکثر ارکان اسمبلی کروڑ پتی اور ارب پتی پائے گئے۔ سنجوک کے صدر صابر بخاری نے کہا کہ ملک کی سیاست پرہمیشہ چند مالدار خاندانوں کی اجارہ داری رہی ہے جس کی وجہ سے ملک کا اکثریتی مڈل کلاس اور غریب طبقہ سیاسی نظام سے دور ہوتا چلاگیا۔ اس سارے عمل میں الیکشن کمیشن نے اپنی ذمہ داریاں کماحقہ ادا نہیں کیں جس سے پیسہ والوں کی حوصلہ افزائی جبکہ غریب مڈل کلاس طبقہ کی حوصلہ شکنی ہوئی۔ سنجوک کے سینئر نائب صدرانجینئر احمد حنیف اور نائب صدرساجد بھٹو نے کہا کہ ممبران اسمبلی کے حالیہ اثاثہ جات بھی اس امر کی غمازی کر رہے ہیں کہ آج بھی ملکی سیاست پر پیسے والوں کا قبضہ ہے ،سوسائٹی کاغریب اور مڈل کلاس طبقہ چاہتے ہوئے بھی آج انتخابی نظام کا حصہ نہیں بن سکتا۔سنجوک کی طرف سے الیکشن کمیشن سے استدعا کی گئی کہ ملک میں انتخابی اصلاحات لائی جائیں تاکہ ملک کے تمام شہری اور طبقات بلا امتیازسیاسی نظام کا حصہ بن سکیں ۔سنجوک نے انتخابی اصلاحات کیلئے الیکشن کمیشن کی معاونت کیلئے اپنی خدمات کی پیش کش بھی کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں