223

فیصل آباد: فیصل آباد، پاکستان کا ثقافتی ورثہ گھوڑا ٹرین ماضی میں گم

فیصل آباد (بیوروچیف) پاکستان کی ثقافتی ورثہ فیصل آباد کی گھوڑا ٹرین ماضی کے پنوں میں کہیں کھو گئی ہے ۔

19ویں صدی میں جہاں ٹرانسپورٹ کے جدید ذرائع مغرب میں آہستہ آہستہ مقبول ہوئے وہیں برصغیر پاک و ہند کے غریب عوام کی آمد و رفت کے لئے گھوڑوں، گدھوں اور اونٹوں کی سواری پر انحصار کرتے رہے ۔ اُس دور میں سماجی کارکن برصغیر کے پہلے سول انجینئر سرگنگا رام نے اپنے گائوں گنگا پور کے لوگوں کے سفر کوآسان بنانے کے لئے فیصل آباد کی تحصیل جڑانوالہ میں گھوڑا ٹرین نامی ٹرام جیسی منفرد سفری سہولت متعارف کرائی۔ جو بچیانہ ریلوے اسٹیشن سے گنگا پور گائوں تک ریلوے ٹریک پر چلتی تھی ۔یہ ٹرام ایک ساتھ 15لوگوں کو لے جاسکتی تھی۔تاریخ دانوں کا کہنا ہے کہ اس منفرد ٹرام پر 1898 میں کام شروع ہوا جبکہ یہ1903میں مکمل طور پر فعال ہو گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں