342

آم کھانے کے فوائد ……(محمد شہزاد منظور، نیوٹریشنسٹ)

تحریر: محمد شہزاد منظور (نیوٹریشنسٹ)

آم کو پھلوں کا بادشاہ کہا جاتا ہے اس کا صرف ذائقہ ہی لاجواب نہیں ہوتا بلکہ آم کھانے کے بیشمار فوائد ہیں ۔

جلد بوڑھا ہونے سے بچاتا ہے:

طبی ماہرین کے مطابق آم وٹامن ای سے بھرپور ہے جس کے استعمال سے انسان صحت مند اور شاداب رہتا ہے جب کہ یہ وٹامن جلد کو ترو تازگی فراہم کرتے ہیںاور چہرے پر دانوں اور کیل مہاسوں سے بچاتے ہیں۔ آم میں شامل وٹامن سی خون میں کولیسٹرول کی مقدار کم کرتا ہے جب کہ اس میں موجود وٹامن اے بینائی کو کمزور ہونے سے بچاتا ہے اور اس کے علاوہ یہ پھل سورج کی تیز شعاعوں سے بھی آنکھوں کو خراب ہونے سے بچاتا ہے۔

دمے سے محفوظ رکھتا ہے:

ماہرین کے مطابق آم میں موجود اجزا انسانی جسم کے لیے انتہائی مفید ثابت ہوتے ہیں اور جو لوگ آم کا زیادہ استعمال کرتے ہیں ان کے دمے کے مرض میں مبتلا ہونے کے امکانات کم سے کم ہوجاتے ہیں۔

کینسر سے بچاؤ میں معاون:

طبی ماہرین کے مطابق آم میں شامل اینٹی آکسیڈنٹ آنتوں اور خون کے کینسر کے خطرے کو کم کرتا ہے جب کہ گلے کے غدود کے کینسر کے خلاف بھی یہ مؤثر کردار ادا کرتا ہے۔ ہارورڈ یونیورسٹی کے ماہرین کے مطابق کولون یا بڑی آنت کے سرطان کے خلاف آم ایک اہم مدافعانہ ہتھیار ثابت ہوا ہے اورآم کھانے کے شوقین لوگوں میں اس سرطان کی شرح نمایاں طور پر کم دیکھی گئی ہے۔

ہڈیوں کی صحت کیلیے مفید:

ماہرین کا کہنا ہے کہ آم کا استعمال ہڈیوں کی بیماریوں سے بھی محفوظ رکھتا ہے اس میں موجود کیلشیم ہڈیوں کو مضبوط رکھتا ہے اور آم کھانے کے شوقین افراد میں وقت سے پہلے ہڈیوں کی کمزوری کے امکانات کم ہوجاتے ہیں۔

ذیابطیس میں بھی کارآمد:

تحقیق کے مطابق آم میں موجود وٹامن اے ،بی،سی اور فائبر کے علاوہ 20 دیگر اجزا پائے جاتے ہیں جو خون کی گردش میں شکر کے جذب ہونے کے عمل کو کم کرتے ہیں۔ امریکی ماہرین کے مطابق آم میں موجود قدرتی مٹھاس کی مناسب مقدار شوگر کے مریضوں کے لئے نقصان دہ نہیں ہوتی۔

نظام ہاضمہ کیلیے ضروری:

آم میں موجود ریشے جنہیں فائبر بھی کہا جاتا ہےآنتوں کی صفائی کرتے ہیں اور نظام ہضم کو درست رکھنے میں مدد دیتے ہیں۔

دل کی صحت کیلیے مفید:

ماہرین کا کہنا ہے کہ دل کے امراض میں مبتلا افراد کے لیے آم ایک بہترین پھل ہے اس میں موجود پوٹاشیم، فائبر اور وٹامن دل کی صحت میں اضافے کا باعث بنتے ہیں جب کہ اس میں موجود بڑی تعداد میں پوٹاشیم بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے میں معاون ثابت ہوتا ہے۔

انفیکشن کے خلاف مؤثر دوا:

ماہرین صحت کے مطابق تمام بیکٹیریا کا حملہ اس لیے ممکن ہوتا ہے کہ جسم کی خارجی تہہ بنانے والی بافتیں کمزور ہوجاتی ہیں تاہم آم کے موسم میں اس کا آزادانہ استعمال بافتوں کی اس کمزوری کو دور کرتا ہے چنانچہ بیکٹیریا کا جسم میں داخلہ ممکن نہیں رہتا اس کیفیت کے بعد پے در پے انفیکشن مثلاً نزلہ‘ زکام اور ناک کی سوزش رونما نہیں ہوئی۔ اس تحفظ کی وجہ آم میں پائی جانے والی وٹامن اے کی وافر مقدار ہے۔

موسم گرما کے آغاز کے ساتھ ہی لوگوں کو جس پھل کا بے صبری سے انتظار ہوتا ہے، وہ کوئی اور نہیں پھلوں کا بادشاہ آم ہے۔ آم نہ صرف لذیذ ہوتے ہں بلکہ صحت کے لیے متعدد فوائد کے بھی حامل ہوتے ہیں اور اعتدال سے کھانے پر یہ مجموعی صحت پر جادوئی اثرات کرسکتا ہے۔ مگر کھانے سے ہٹ کر بھی آم چہرے کی خوبصورتی کے لیے انتہائی کارآمد ثابت ہوسکتے ہیں۔ آم کا گودا کو جلد پر لگانا متعدد جلدی مسائل کا حل ثابت ہوتا ہے۔ ایسے ہی چند فوائد آپ کو دنگ کردیں گے۔

آم کے گودے کا فیس پیک:

گرم موسم میں جلد کی رنگت خراب ہونا عام ہوتا ہے مگر اس سے بچنا بھی آسان ہے۔ آم کا گودا جلد کی نمی بھی بحال رکھتا ہے۔ رنگت صاف رکھنے اور جلد کی نمی برقرار رکھنے کے لیے آم کا گودا لیں اور اسے چہرے پر 2 سے 3 منٹ تک رگڑیں، پھر اسے 5 منٹ کے لیے لگا چھوڑ دیں، جس کے بعد ٹھنڈے پانی سے دھولیں۔ اس سے جلد کی جگمگاہٹ واپس آتی ہے جبکہ رنگت بھی بہتر ہوتا ہے، اس عمل کو موثر نتائج کے لیے ایک ہفتے میں 3 بار دہرائیں۔

آم اور بیسن کا فیس پیک:

اس کے لیے پکے ہوئے آموں کا گودا اور 2 چائے کے چمچ بیسن، 1/2 چائے کا چمچ شہد اور چند بادام لیں۔ ایک ڈونگا لیں اور اس میں آم کا گودا ڈال دیں، جس کے بعد بیسن، بادام اور شہد کو گودے میں ڈال کر انہیں اچھی طرح مکس کرکے پیسٹ بنالیں۔ اس مکسچر کو نرمی سے چہرے پر رگڑیں اور 10 سے 12 منٹ کے لیے لگا چھوڑ دیں۔ اس کے بعد پانی سے دھولیں۔ اس عمل کو دوبار دہرانا جھلسی ہوئی جلد کو بحال کرتا ہے۔

آم اور دہی کا فیس پیک:

اگر تو آپ کی جلد آئلی ہے تو یہ فیس پیک آپ کے لیے ہی ہے۔ پکے ہوئے آم کا گودا، ایک کھانے کا چمچ دہی اور ایک چائے کا چمچ شہد لے کر انہیں اچھی طرح مکس کرکے گاڑھے پیسٹ کی شکل دے دیں۔ اسے چہرے پر لگائیں اور 10 منٹ بعد دھولیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں