202

کراچی: فلاحی اداروں کے شیڈز گرانے سے ایمبولینس سروسز متاثر

کراچی (محمد یوسف سے) فلاحی اداروں کے شیڈز گرانے سے ایمبولینس سروسز متاثر، چند روز قبل شہر کی فٹ پاتھوں سے فلاحی اداروں کے شیڈز ختم کردیے گئے تھے۔ جس سے ایدھی فائونڈیشن دیگر اداروں کی ایمبولینس سروس متاثر ہوگئی ، ٹریفک حادثات اور ہیٹ ویو کے دوران ہنگامی امداد میں مشکلات کا سامنا رہا، ایدھی فائونڈیشن کے رابطے کا کمیونی کیشن سسٹم ختم ہوگیا، ایدھی فائونڈیشن کے چیئرمین فیصل ایدھی کا کہنا ہے کہ کراچی میں سرکلر ریلوے ٹریک کے اطراف تجاوزات کے خاتمے کے آپریشن میں منہدم کی گئی غریب آبادیوں کی حمایت کی پاداش میں شہر میں قائم ایدھی فائونڈیشن کے 10ایمرجنسی بوتھ گرا دیے گئے جب کہ 3 مقامات سے عوامی دسترخوان بھی ختم کردیے گئے۔

یہ بھی پڑھیے: کراچی: ضلع وسطی میں 65 مقامات پر فلاحی اداروں کے دفاتر اور دستر خوان مسمار

ہمارے نمائندے سے بات کرتے ہوئے فیصل ایدھی نے بتایا کہ کراچی کے 10مقامات پر ایمرجنسی رسپانس کے لیے قائم کردہ بیشتر بوتھ حکام سے باضابطہ اجازت لے کر قائم کیے گئے جن سے عوام کی آمدروفت میں کوئی خلل نہیں پڑ رہا تھا۔ کچھ بوتھ 30 سال پرانے تھے جو بڑی آبادی کو ایمرجنسی کی صورت میں اسپتال منتقلی کی سہولت فراہم کررہے تھے، ان میں سے بیشتر بوتھ بلیک اسپاٹس پر قائم تھے جہاں ٹریفک حادثات کا تناسب بہت زیادہ تھا ،کراچی میں 10مقامات پر قائم بوتھ پر لگے وائرلیس سسٹم سے ادارے کا کمیونی کیشن سسٹم چلتا تھا وائر لیس کے ذریعے ایمرجنسی کے پیغامات ریلے کیے جاتے تھے، تجاوزات کے خاتمے کے نام پر ایدھی کے ایمرجنسی رسپانس بوتھ ختم ہونے سے ٹریفک حادثات میں زخمیوں کو بروقت اسپتال منتقلی میں دشواری کا سامنا ہے ساتھ ہی حالیہ ہیٹ ویوو کے دوران بھی ہنگامی پیغامات کی ترسیل میں مشکلات کی وجہ سے ایمرجنسی سروس متاثر ہو رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں