216

پاکپتن: سپیشل افراد کو معاشرے کا کارآمد شہری بنانے کے لئے والدین سمیت تمام طبقات کے لوگ اپنی ذمہ داری نبھائیں. احمد کمال مان. ڈپٹی کمشنر.

پاکپتن ( بیورورپورٹ)سپیشل افراد کی بحالی اولین ترجیح ہے ، سپیشل افراد کو معاشرے کا کارآمد شہری بنانے کیلئے والدین تمام طبقات کے لوگ انکی متواتر طریقے سے دیکھ بھال کریں اور انہیں مناسب رہنمائی دیں سپیشل افراد معاشرے پر بوجھ نہیں بلکہ انکو صلاحیتوں کو استعمال میں لا کر انہیں اچھا شہری بنایا جا سکتا ہے ان خیالات کا اظہار ڈپٹی کمشنر احمد کمال مان نے ضلعی ریڈرسل کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا اجلاس میں ڈپٹی ڈائریکٹر سوشل ویلفےئر چوہدری افضل بشیر مرزا ، ہیلتھ ،ایجوکیشن حکام سپیشل افراد کی تنظیم کے نمائندوں دیگر افسران بھی موجود تھے ڈپٹی ڈائریکٹر سوشل ویلفےئر افضل بشیر مرزا نے سپیشل افراد کی بحالی اور مختلف سرکاری اداروں میں3 فیصد کو ٹے پر بھرتی کے عمل کرنے پر تفصیلی بریفنگ د ی سپیشل افراد کے نمائندوں نے کہا کہ حکومت پنجاب کی طرف سے سپیشل افراد کو کنوینس کی مد میں50 فیصد کرایہ کی ادائیگی پر رعایت دی گئی ہے اور مذکوہ معذورفراد 50 فیصد کرایہ ادا کرکے مطلوبہ مقامات پر جا سکتے ہیں حکومتی پالیسی کا ضلع پاکپتن میں بھی نفاذ کیا جائے تاکہ ضلع پاکپتن کی سپیشل افراد بھی اس سے مستفید ہو سکیں انہوں نے کہا کہ جس طرح دیگر تعلیمی بورڈز معذور افراد سے فیس نہیں لے رہے اور سپیشل افراد کو ہر ممکن سہولیات مہیا کر رہے ہیں میٹرک اور ایف اے کے معذ رو طلباء سے فیس لینے سے گریز کیا جائے حکومتی پالیسی کے مطابق بچوں کو تعلیم دینے کیلئے تعلیم دوست اقدامات کیے جائیں ڈپٹی کمشنر احمد کمال مان نے تمام متعلقہ اداروں کو ہدایات جاری کیں کہ3 فیصد کوٹہ کے تحت میرٹ کی بنیاد پر صاف شفاف طریقے سے بھرتی کی جائے حکومتی ہدایات کے مطابق معذور افراد سے50 فیصد کر ایہ کی ادائیگی پر مطلوبہ مقامات پر پہنچائیں ، ڈپٹی کمشنر احمد کمال مان نے سیکرٹری ڈی آر ٹی اے کو ہدایات جاری کیں کہ متعلقہ سپیشل افراد کو سفری کارڈ جاری کریں اور تمام معذور افراد اس کارڈ کے زریعے 50 فیصد کرائے کی ادائیگی پر مطلوبہ مقامات پر آ جا سکیں گے ،انہوں نے کہا کہ سیکرٹری ڈی آر ٹی اے اس عمل کی مکمل طورپ پر پا سدادری کر وائیں اور بھرتیوں کے شیڈول پر 3 فیصد کوٹہ کے عمل کو یقینی بنائے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں