211

ساہیوال: لائبریری میں کتابوں کا اجراء رک گیا، طالب علموں اور عام شہریوں کو شدید پریشانی.

ساہیوال(خصوصی رپورٹ) گورئمنٹ جناح پبلک لائبریری کے ملازمین اور انچارج کے درمیان شدید اختلافات کے باعث لائبریری میں ویرانہ کتابوں کا اجراء رک گیا،طالب علموں اور عام شہریوں کو شدید پریشانی،لائبریری کے ملازمین نے ڈائریکٹر جنرل لائبریری کو فوری کاروائی کے لیے تحریری درخواست دے دی۔ معلوم ہوا ہے کہ چیف لائبریرین طارق کے رویہ کے خلاف سنئیر اور جونئیر ملازمین کی ہڑتال جاری ہے جسکے باعث کتابوں کا اجراء مکمل طور پر بند ہے۔ لائبریری کے سنئیر اور جونئیر ملازمین نے اپنے اوپر ہونے والے ظلم اور محمد طارق کی کرپشن کے بارے میں ڈائریکٹر جنرل لائبریری پنجاب کو تحریری طور پر آگا ہ کر دیا ہے۔اپنی درخواست میں سٹاف نے کہا ہے کہ لائبریرین نے تمام اکاوئنٹس اکاوٹنٹ سے خفیہ رکھے ہوئے ہیں جن میں سائیکل سٹینڈ اور کنٹین کے ٹھیکے جات شامل ہیں بلڈنگ مرمت کے لیے آنے والی تمام رقم اپنی ذاتی رہائش گاہ پر خرچ کی جا رہی ہے سرکاری گاڑی کا بے دریغ استعمال کیا جاتا ہے مگر اسکی لاگ بک نہیں لکھی جاتی سرکاری ڈاک کا کہیں اندراج نہیں کیا جاتا اپنے خلاف آنے والی ڈاک کو ضائع کر دیا جاتا ہے چھٹی کی صورت میں کسی کو چارج نہیں دیا جاتااور کئی کئی روز غیر حاضر رہتا ہے عملہ میں گروپ بندی کو فروغ دیا جا رہا ہے لائبریری میں غیر متعلقہ افراد ہر وقت محفل جمائے رکھتے ہیں جس سے لائبریری کا ماحول خراب ہو رہا ہے لائبریری کے تمام سٹاف نے متفقہ طور پر محمد طارق کی ٹرانسفر کا مطالبہ کیا ہے اور کہا ہے کہ لائبریری کے حالات خراب ہوئے تو تمام تر ذمہ داری ضلعی انتظامیہ اور ڈائریکٹر جنرل پنجاب لائبریریز پر ہو گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں