197

لاہور: وزیر قانون کے ساتھ مذاکرات کامیاب، نابینا افراد کا دھرنا ختم، ٹریفک بحال.

لاہور (اسد الیاس سے) لاہور میں نابینا افراد ایک دفعہ پھر اپنے مطالبات کے لئے سڑکوں پر نکل آئے جس کے باعث ٹریفک کا نظام درہم برہم رہا۔ بعدازاں وزیر قانون و بلدیات راجہ بشارت کے ساتھ مذاکرات کامیاب ہونے پر نابینا افراد نے احتجاجی دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا۔ تفصیلات کے مطابق نابینا افراد اپنے مطالبات کے حق میں ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر آ گئے۔ نابینا افراد نے پہلے پریس کلب کے باہر سڑک کو بلاک کر کے احتجاج کیا جس کی وجہ سے شملہ پہاڑی چوک کے اطراف میں ٹریفک جام ہونے سے گاڑیوں کی قطاریں لگی رہیں۔ بعد ازاں نابینا افراد احتجاج کرتے ہوئے پنجاب اسمبلی کے سامنے مال روڈ پر پہنچ گئے اور دھرنا دے کر شاہراہ کو دونوں اطراف سے بند کر دیا۔ نابینا افراد کا کہنا تھاکہ بے روز گار نابینا افراد کو ملازمتیں فراہم کی جائیں اور ڈیلی ویجز پر بھرتی ملازموں کو مستقل کیا جائے۔ اس موقع پر نابینا مظاہرین نے پنجاب حکومت کیخلاف شدید نعرے بازی کی۔ پولیس کی جانب سے مال روڈ کو مختلف مقامات سے بندکر دیا گیا جس کی وجہ سے ملحقہ شاہراہوں پر ٹریفک کا دبائو بڑھنے سے شہری شدید مشکلات کا شکار رہے، رات گئے وزیر قانون وبلدیات راجہ بشارت کے ساتھ چئیرنگ کراس پر بیٹھے احتجاجی نابینا افراد نے مذاکرات کیے۔ مذاکرات کے بعد نابینا افراد نے احتجاجی دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا۔ وزیر قانون وبلدیات راجہ بشارت کا کہنا تھاکہ نابینا افراد کے مسائل کے پائیدار حل کے لیے بہتر قانون سازی کی جائے گی۔ معذور افراد کے لیے مختص کوٹے میں نابینا افراد کو جائز حصہ دیا جائے گا جبکہ طویل عرصہ سے ڈیلی ویجز ملازمین کو کنٹریکٹ پر اور کنٹریکٹ ملازمین کے کنٹریکٹ میں توسیع کی جائے گی۔ راجہ بشارت نے دیگر اہم امور کے تصفیے کیلئے 2 مئی کو اجلاس طلب کرلیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں