206

محراب پور: محکمہ صحت کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے نرسز میں بے چینی پائی جارہی ہے.ینگ نرسز ایسوسی ایشن.

محراب پور(ملک مشتاق احمد سے) ینگ نرسز ایسوسی ایشن شہید بینظرآباد ڈویزن کے صدر مجاہد آرائیں، جنرل سیکریٹری ضمیر بھٹی، انفارمیشن سیکریٹری عمران رفیق چوہان و دیگر نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ تاحال سندھ نرسز کے جائز مطالبات کی منظوری کے نوٹیفکیشن جاری نہ ہوسکے. محکمہ صحت کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے سندھ کے نرسز میں بے چینی پائ جارہی ہے 2017 سے محکمہ صحت میں چکر لگا لگا کر تھک چکے ہیں. ہر روز لولی پاپ دیا جارہا ہے. وائے این اے سندھ کے مرکزی رہنماوں نے 16 اپریل کو دھرنے کی کال دی تھی لیکن سندھ حکومت نے مذید 10 دن کی مہلت مانگی پھر بھی ہم نے اپنے وائے این اے سندھ کے مرکزی رہنماوں کے اس فیصلے کو لبیک کہا. ہم سندھ حکومت کو بتانا چاہتے ہیں کہ اب مذید چال بازیاں نہیں چلیں گی، اگر سندھ حکومت نے ہمارے مطالبات کی منظوری کے نوٹیفکیشن 28 اپریل تک جاری نہ کئے تو ہم اپنا احتجاج کا حق محفوظ رکھتے ہیں. پھر انشاءاللہ 29 اپریل بروز پیر سندھ بھر میں کام چھوڑ ہڑتال ہوگی اور کراچی پریس کلب کے سامنے دمادم مست قلندر ہوگا، ہم نہیں چاہتے کہ ہماری وجہ سے مریضوں کو دشواری کا سامنا کرنے پڑے. لیکن سندھ حکومت ہمارے جائز مطالبات تسلیم کرنے کے بجائے 2017 سے تاحال جھوٹے دلاسوں سے کام لے رہی ہے اس لئے اب ہمارے پاس دھرنے کے علاوہ کوئی اور چارہ نہیں ہے ہم پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری، وزیراعلیٰ سندھ، وزیر صحت سندھ اور محکمہ فنانس سے اپیل کرتے ہیں کہ ہمارے مطالبات 28 اپریل سے پہلے منظور کرکے نوٹیفکشن جاری کرکے سندھ کے نرسز میں پھیلی بے چینی کو ختم کیا جائے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں