190

پاکپتن: دربارحضرت بابا فرید پرحفاظت پاپوش ٹھیکیدار کی بھتہ خوری بند کروائی جائے. زائرین کا مطالبہ.

پاکپتن(پیر توقیر رمضان سے) درگاہ بابا فرید کا پاپوش ٹھیکیدار زائرین کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے لگا۔ جوتا رکھنے کی من مرضی کی قیمت وصول کرنے پر زائرین سراپا احتجاج۔ تفصیلات کے مطابق برصغیر پاک وہند کے عظیم صوفی بزرگ و پنجابی زبان کے پہلے صوفی شاعر حضرت بابا فرید الدین مسعود گنج شکر رحمۃ اللّٰہ علیہ کے مزار پر محکمہ اوقاف کی مبینہ ملی بھگت سے پاپوش ٹھیکیدار فی جوتا رکھنے کی من مرضی کی قیمت وصول کرنے لگا. درگاہ بابا فرید پر حاضری کیلئے آنے والے زائرین نے بتایا کہ جوتا اسٹینڈ پر مامور پاپوش ٹھیکیدار کا عملہ فی جوتا دس سے بیس روپے تک وصول کرتا ہے نہ دینے پر بحث و تکرار کے ساتھ ساتھ بدتميزی بھی کی جاتی ہے۔ درگاہ بابا فرید کی مسجد میں نماز کیلئے آنے والے نمازیوں کا کہنا ہے کہ پاپوش اسٹینڈ پر دینے کیلئے جیب میں دس سے بیس روپے موجود نہ ہوں تو درگاہ بابا فرید کی مسجد میں نماز کی ادائیگی ممکن نہیں زائرین و شہریوں نے شدید غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعظم پاکستان عمران خان، وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار، صوبائی وزیر اوقاف سے مطالبہ کیا ہے کہ درگاہ بابا فرید پاپوش ٹھیکیداری کی مد میں بھتہ خوری بند کرائی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں