354

پاکپتن: ڈاکٹر عبدالغفار زاہد نامور ہومیوپیتھ اور بہترین انسان تھے. تعزیتی ریفرنس سے ڈاکٹر شاہد چشتی ودیگر کا خطاب.

پاکپتن(ڈاکٹر اظہر حسین سے) ڈاکٹر عبدالغفار زاہد نامور ہومیوپیتھ اور بہترین انسان تھے ، انسانیت دوستی ان کا شعار تھا۔ بہت نرم مزاج اور درد دل رکھنے والے انسان تھے، وہ ایک شجر سایہ دار اور دکھی انسانیت وغریب مریضون کے لیے امید کی کرن تھے۔ ان خیالات کا اظہار ہومیوپیتھک ڈاکٹر شاہد مرتضیٰ چشتی بانی پاکپتن ہومیوپیتھک میڈیکل ایسوسی ایشن نے ایسوسی ایشن کے زیر انتظام ڈپٹی ڈائریریکٹر سوش ویلفیئرافضل بشیر مرزا کی زیر صدارت پاکپتن ہومیوپیتھک میڈیکل کالج میں ان کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے منعقدہ تعزیتی ریفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تعزیتی ریفرنس میں بابا فرید ہومیوپیتھک ویلفیئر ایسوسی ایشن، پاکستان طبی کانفرنس ضلع پاکپتن، پاکستان سوشل ایسوسی ایشن، پریس کلب پاکپتن اور بریلینٹ فورم کے نمائندوں نے بھر پور شرکت کی اور راہنماؤں نے خطاب کیا۔ اس موقع پر ڈاکٹر صاحب کے والد محترم عبدالرزاق اور ان کے بھائی پی ایچ ڈی سکالر ڈاکٹرمحمد الیاس ہیڈ ڈیپارٹمنٹ انگلش یونیورسٹی آف اوکاڑا نے کہا کہ وہ اپنی فیملی میں سب زیادہ ذمہ دار فرد کی حیثیت سے رہتے اور ہردلعزیز تھے، سیکرٹری جنرل حکیم لطف اللہ نے کہا کہ زندہ قومیں اپنے قائدین اور معاشرہ کی نامور شخصیات اور اچھے انسانوں کو خراج عقیدت پیش کرکے دراصل اپنا قد بڑا کرتے ہیں اور پاکپتن میں شروع کی گئی اس روایت پر ہم بلا شبہ فخر کرسکتے ہیں۔صدر اتحاد بین المسلمین مفتی محمد زاہد اسدی نے کہا کہ ڈاکٹر صاحب جیسی شخصیات ہمارے پاس اللہ کی طرف سے بطور انعام بھیجی جاتی ہیں اور ان کا چلا جانا ہمارے لیے بہت ملال کا باعث ہوتا ہے ان کوخراج عقیدت پیش کرنے کا سب سے اعلیٰ طریقہ یہ ہے کہ ہم ان کے اچھے کاموں کی پیروی کریں اور ان کو آگے بڑھائیں۔ ہومیوڈاکٹرمیاں غلام مرتضیٰ صدر ایسوسی ایشن نے کہا کہ ڈاکٹر صاحب ہمارے ساتھ بہت مشفقانہ رویہ رکھتے تھے اورایسوسی ایشن کے سرپرست کی حیثیت سے ہر مشکل گھڑی میں ہماری راہنمائی فرماتے اور ہم میں سے اکثر ہومیوپیتھ ان کے شاگرد ہونے پر فخر کرتے ہیں۔ جنرل سیکرٹری حافظ عبدالمصطفیٰ نے اپنے خطاب میں کہا وہ ایک مسیحا کی حیثیت سے اپنے مریضوں کے لیے خصوصی دلچسپی کے ساتھ اپنے فن کی بہتری کے لیے دن رات کوشان رہتے۔ چیئر مین ایجوکیشن ونگ ہومیوڈاکٹر محمد اکرم چوہدری نے کہا کہ وہ ایک شفیق استاد، مخلص اور محنتی ہومیوپیتھ، عظیم انسان تھے۔ صدر طبی کانفرنس حکیم عبدالمجید شامی نے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ ہمارے بڑے بھائی کی حیثیت سے ہمیشہ شفقت سے پیش آتے آج جب وہ ہمارے درمیان موجود نہیں تو ہر آنکھ اشکبار ہے ان کی رحلت سے پیدا ہونے والا خلاء صدیوں پر نہیں ہوپائے گا۔ پاکپتن ہومیوپیتھک میڈیکل کالج کے پرنسپل محمود ریاض جوئیہ نے کہا کہ ضلع پاکپتن کے سبھی ہومیوپیتھس کے لیے وہ ایک راہنما کی حیثیت کے حامل تھے ان کی کمی تاقیامت محسوس ہوگی۔ اس موقع پرسینئر نائب صدر ہومیوڈاکٹر احمد شیر کانجو،ہومیوڈاکٹر عارف ممتاز بودلہ، ہومیوڈاکٹر چوہدری جاوید ، سید ذوالفقار شاہ ایڈووکیٹ ، حکیم عطا فرید نے بھی خطاب کیا اور ان کو خراج عقیدت پیش کیا۔ اس موقع پر شہر بھر کے ہومیوپیتھک ڈاکٹرز،حکماء، وکلاء ، تاجران، صحافی سیاسی وسماجی تنظیمات کے عہدیداران اور ان کے فیملی ممبران نے بھر پور شرکت کی تعزیتی ریفرنس سے قبل ان کے ایصال ثواب کے لیے قرآن خوانی بھی کی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں