203

ساہیوال: حکومت کسانو ں کو فصلوں کے نا گہانی نقصان پر بیمہ رقم کی ادائیگی کا آغاز کر رہی ہے. ملک نعمان احمد لنتڑیال. صبائی وزیر زراعت.

ساہیوال(خصوصی رپورٹ)صوبائی وزیر زراعت ملک نعمان احمد لنگڑیال نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت صوبے کی تاریخ میں پہلی بار کسانو ں کو فصلوں کے نا گہانی نقصان پر بیمہ رقم کی ادائیگی کا آغاز کر رہی ہے. جس سے کسانوں کو پہنچنے والے مالی نقصان کا تدارک کیا جائے گا، ابتدائی طور پرتحصیل چیچہ وطنی میں کپاس کی فصل کے 1986کاشتکاروں کو 8171روپے فی ایکٹر کے حساب سے ادائیگی کی جا رہی ہے۔ پنجاب حکومت نے چار اضلاع ساہیوال، شیخوپورہ، لودھراں اور رحیم یار خان سے کپاس اور دھان کی فصلوں کے بیمے کا آغاز کیا ہے جس سے ابتدائی طور 16ہزار450کاشتکاروں کو پیداواری نقصان سے تحفظ فراہم کیا گیا ہے۔ سکیم کی افادیت کو مد نظر رکھتے ہوئے اسے مزید 9اضلاع اوکاڑہ، بہاولپور، بہاولنگر، خانیوال، ڈیرہ غازی خان، لیہ، منڈی بہاؤالدین، قصور اور بھکر تک پھیلایا جا رہا ہے۔ انہوں نے یہ بات رائے علی نواز سٹیڈیم میں کسانوں کو بیمہ رقم کی ادائیگی کے اپنی نوعیت کے پہلے پروگرام میں کپاس کے 1986کسانوں میں چیک تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ جس میں تحریک انصاف کے رہنمارائے حسن نواز، فیصل جلال، شیخ محمد چوہان، ڈپٹی کمشنر محمد زمان وٹو، چیئر مین پی ایچ اے علی شکور کے علاوہ کسانوں، سیاسی کارکنوں، صحافیوں اور زندگی کے دوسرے شعبوں سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں افراد نے شرکت کی۔ انہو ں نے کہا کہ زراعت ایک اوپن ایئر انڈسٹری ہے او رقدرتی آفات کی وجہ سے چھوٹے کسانو ں کو خصوصا شدید مالی نقصانات اٹھانے پڑتے تھے جس کی وجہ سے کسان اپنی محنت کا پورا معاوضہ حاصل نہیں کر سکتے تھے اور ان کی مالی حالت میں بھی کوئی بہتری نہیں آتی تھی۔ وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے کسانوں کے درد محسوس کرتے ہوئے فصلوں کے بیمہ پروگرام کا آغاز کیا جس سے زمینداروں کو قدرتی آفات میں فصلوں کے نقصان کی صورت میں مالی معاونت فراہم کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ ابتدائی طو رپر اس تقافل سکیم کے تحت 16ہزار 450کاشتکاروں کو تحفظ فراہم کیا گیاہے جس میں 5ایکٹر تک کے کاشتکاروں کو بیمے کے پرییئم پر 100فیصد جبکہ 5سے 25ایکٹر تک کے کاشتکاروں کو 50 فیصد سبسڈی دی گئی ہے۔ صوبائی وزیر زراعت ملک نعمان احمد لنگڑیال نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت زرعی ترقی اور کسانوں کی خوشحالی کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھا رہی ہے تا کہ کسانوں کے مسائل مستقل بنیادوں پر حل ہوں اور وہ زیادہ دلجمعی کے ساتھ ملک کی زرعی پیداوار میں اضافہ کریں. کیونکہ پاکستان کی خوشحالی زراعت کی ترقی میں ہی مضمر ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ کسانوں کے لئے بیمہ سکیم شروع کرنے پر محکمہ زراعت کے افسران کی خدمات کو سراہا اور بتایا کہ کراپ رپورٹنگ سروس نے سائنسی بنیادوں پر ہر زمیندار کے پیداواری تخمینے کے بنیاد پر فصلات کے نقصان کا اندازہ لگایا اور ان کے لئے بیمہ رقم مختص کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں