219

نئی دہلی: پلوامہ حملے پر مودی سرکار کا بھانڈا اپنوں نے ہی پھوڑ دیا.

نئی دلی (بھارتی میڈیا سے) پلوامہ حملے پر بے پر کی اُڑاتی مودی سرکار کا بھانڈہ خود بھارتی سیاست دانوں نے پھوڑ دیا۔
مختلف بھارتی رہنما بھی پلوامہ حملے پر مودی سرکار کے واویلے اور حقائق سے آنکھیں چرانے کو ہندو جذبات کو بھڑکا کر حالیہ انتخابات میں فائدہ حاصل کرنے کی بھونڈی سازش قرار دے رہے ہیں۔ معروف سماجی کارکن وامن میشرم نے کہا ہے کہ بی جے پی کی حکومت کو پلوامہ حملے سے 8 روز قبل ہی معلوم ہوگیا تھا تاہم حکومت نے سیاسی مفادات کے حصول کے لیے حملہ روکنے کی کوئی کوشش نہیں کی۔ مودی سرکار نے حب الوطنی پر سیاست کو ترجیح دی تاکہ انتخابی مہم کو گرم کیا جا سکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مودی سرکار کو حملے کی پیشگی اطلاع کے بعد جوانوں کو بسوں میں بھیجنے کے بجائے ہیلی کاپٹر کا استعمال کرتے لیکن لیکن انہوں نے ایسا نہیں کیا۔ مودی پلوامہ حملے کو انتخابات میں کامیابی کی سیڑھی بنانا چاہتے ہیں۔ مقبوضہ کشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کا کہنا ہے کہ ہم دیکھ رہے ہیں کہ عالمی طاقتیں پاکستان کے ساتھ کھڑی ہیں، پاکستان کو تنہا سمجھنا بھارت کی سب سے بڑی بھول ہے۔ افغانستان میں طالبان اور امریکا کے درمیان مذاکرات میں پاکستان کا حصہ ہے لیکن بھارت کہاں کھڑا ہے؟ یہ سوچنے کی بات ہے۔ محبوبہ مفتی نے مودی سرکار کو پاکستان سے چھیڑ چھاڑ کرنے سے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ جنگ نہ بھارت وپاکستان دونوں کے فائدے میں نہیں ہے. بھارت صرف جنگ کی باتیں کر رہا ہے گب کہ حقیقت میں بی جے پی خود بھی جنگ نہیں چاہتی.اس سے قبل بھارت کے لیفٹننٹ جنرل (ر) دیپندرا سنگھ ہوڈا نے بھی پلوامہ حملے کو سیکیورٹی اداروں اور مودی حکومت کی ناکامی قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ حملے میں استعمال ہونے والا بارود مقامی ساختہ تھا اور خود کش حملہ آور بھی مقامی تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں