283

پڑپہ: قبرستان کی جگہ پر غیرقانونی قبضہ، تجاوزات کی بھرمار. ڈپٹی کمشنر نوٹس لیں.

ہڑپہ(چوہدری منیراحمد ساجد سے) قبرستان کی جگہ پر غیر قانونی قبضہ اور تجاوزات کی بھر مار ڈپٹی کمشنر ساہیوال سے نوٹس لینے مطالبہ. قابضین نے قبرستان کی جگہ پر ناصرف مکان بناکرکرایہ پردے رکھے بلکہ وسیع رقبے پر لکڑیوں کا کاروبار بھی کر رکھا ہے جن کے خلاف کاروائی سست روی کا شکار ہے. تفصیلات کے مطابق جناح ٹاون ہڑپہ اسٹیشن کاقبرستان جوتقریبا22کنال رقبہ پر مشتمل ہے کے 16کنال کے قریب رقبہ پرغیرقانونی قابضین نےنا صرف مکان بنا کر مہنگے داموں فروخت کر دیے ہیں اور مکانات کو کرایہ پربھی دے رکھا ہے. قبضہ بافیا نے قبرستان کی جگہ پر لکڑی کا کاروبار بھی جمارکھا ہے جس کے ذریعے ناجائز طریقے سے پیسے بھی کمائے جا رہے ہیں عوامی و سماجی حلقوں نے ڈپٹی کمشنر ساہیوال سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس درینہ مسئلے پر خصوصی توجہ دیں اور قبرستان کی جگہ کی واگزارکروانے کے لیے ٹھوس کاروائی کی جائے. مقامی آبادی نے قبروں کی جانب گٹروں کا پانی بھی چھوڑ رکھا ہے جس سے قبروں کو نقصان پہنچنے کے اند یشہ کے ساتھ ساتھ وہاں اپنے پیاروں کی قبروں پر دعا کے لیے آنے والے ذائرین گٹروں کے پانی کی بدبو اور رستہ نہ ہونے کے سبب اذیت ناک قرب سے گزرنا پڑتا ہے. شہریون کا مذید کہنا تھا کہ سرکاری جگہوں پر قبضہ مافیا اور تجاوزات کے خلاف ہڑپہ باالخصوص قبرستان کی جگہ کی واگزاری کے لیے پیپر ورک مکمل ہونے کے باوجود کاروائیاں سست روی کا شکار ہیں جس سے عوام میں اپنے اداروں پر عدم اعتماد بڑھتا جارہا ہے. ڈپٹی کمشنر ساہیوال کو چاہیئے کہ اس معاملہ کا فوری نوٹس لے کر کاروائی کے احکامات دیں اور فی الفور قبرستان کی جگہ کو قابضین سے واگزارکروا کرقبرستان کی حد بندی کی جائے تاکہ آئندہ قبرستان کی جگہ پر لوگ قبضہ کرنے سمیت سیوریج کا پانی چھوڑنے سے باز رہیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں