226

پاکپتن: کسان کی خو شحالی کے بغیر معاشی اشاریے بہتر نہیں ہو سکتے.احمد کمال مان. ڈپٹی کمشنر.

پاکپتن(حیدر علی شہزاد)ڈپٹی کمشنر احمد کمال مان نے کہا ہے کہ ملکی معیشت زراعت سے وابستہ ہے اور کسان کی خو شحالی کے بغیر معاشی اشاریے بہتر نہیں ہو سکتے،کسانوں کو معیاری کھادوں اور کیمیائی ادویات کے ساتھ ساتھ اعلی معیارکے بیجوں ں کی فراہمی کیلئے مسلسل کاو شیں کریں ان خیالات کا اظہار انہوں نے ضلعی ایڈوائزری و ٹاسک فورس سے متعلق بلائے گئے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا اجلاس میں ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت ریاض احمد ایڈیشنل ڈائریکٹر لائیو سٹاک ڈاکٹر خالد رشید ڈسٹرکٹ پبلک پر اسیکیوٹر افضل علی اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت محمد اسلم زراعت آفسیر محمد لطیف امین زاہد زراعت آفسیر پلانٹ پر وٹیکشن ایریگیشن پیسٹی سائیڈ واٹر مینجمنٹ سمیت دیگر افسراں موجود تھے ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت توسیع ریاض احمد نے آلو گندم کینولہ ،مکئی کی کاشت و کٹائی سے متعلق بریفنگ دی انہوں نے کہا کہ رجسٹریشن کسان کارڈ کیلئے 57851 کسان رجسٹرڈ ہو چکے ہیں اراضی اریکارڈ سنٹر کے تحت 14913کسانوں کی رجسٹریشن ہو چکی ہے 9439 کسانون کو زرعی قرضہ جات بھی دیے گئے ہیں محکمہ زراعت نے 83 انسپیکشن کی ہیں جن میں سے 57 غیر معیاری ادویات و بیج فروخت کرنیوالوں سے 332000 سے جر مانہ وصول کیا گیا ہ11فرٹیلائزر ڈیلرکے خلاف مقدمات درج کروائے گئے ایڈیشنل ڈائریکٹر لائیو سٹاک ڈاکٹر خالد رشید نے لائیو سٹاک ،واٹر مینجمنٹ نے پختہ کھالوں کی تعمیر، فوڈ کنٹرو لر نے گندم کی خریداری کراپ آفسیر نے فصلوں کی صورتحال انہار کے حکام نے نہروں اور آبی راجباؤ ں میں پانی کی صورتحال سے متعلق بریفنگ دی ڈپٹی کمشنر احمد کمال مان نے کہا کہ جعلی کھادوں اور غیر معیاری بیجوں کاکاروبار کرنیوالے کسی رعایت کے مستحق نہیں انہوں نے تمام متعلقہ اداروں کے افسران کو ہدایات جاری کیں کہ فرٹیلائزر ڈیلر کی دوکان سے زرعی ادویات کی سیمپلنگ کریں اورجعلی کھادوں غیر معیاری بیج فروخت کرنے والوں کا محا سبہ کریں زرعی ادویات کے مقر کردہ نرخوں سے زائد قیمتیں وصول کرنیوالوں کاشتکاروں کا استحصال کرنیوا لوں کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں