484

پاکپتن۔ کچہری سے پسند کی شادی کرنے والی جواں سالہ خاتون اغواء

ویڈیو دیکھنے کے لیے یہاں کلک کریں

پاکپتن(محمد علی رحمانی سے ) عدالت بیان دینے کے لئے آنے والی لڑکی ضلع کچہری سے اغواء. تھانہ فرید نگر پولیس نے خاوند کے بیان پر تین خواتین سمیت 20 افراد کے خلاف اغواء کا مقدمہ درج کر لیا. چند قدم پر کھڑی پولیس منہ تکتی رہ گئی کچہری سے دن دیہاڑے جواں سالہ خاتون اغواء. نمائندہ بریلینٹ محمد علی رحمانی کے مطابق مغویہ مسمات یاسمین بی بی نے اپنی مرضی سے رستم کے ساتھ شادی کی تھی جو اس کے لیے جرم بن گیا. خاتون کے خاوند رستم کی طرف سے دی گئی درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ “ملزمان کی طرف سے ہمیں جان سے مارنے کی دھمکیاں مل رہی ہیں میں اور میری بیوی اپنی زندگی کی پروٹیکشن کیلئے عدالت آئے تھے کہ ملزمان میری بیوی کو سر عام اغواء کرکے اٹھا کر لے گئے۔ تفصیلات کے مطابق پاکپتن کے نواحی گاؤں 95 ڈی کے رہائشی دونوں میاں بیوی عدالت میں بیان دینے کے لئے آئے تو ورثاء لڑکی کو زبردستی موٹر سائیکل پر بٹھا کر لے گئے (جیسا کہ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے) تھانہ فرید نگر پولیس نے لڑکی کے ورثاء منظور ریاض لیاقت علی گوہر اقبال غفور شوکت اشرف اور پانچ خواتین شہناز تسلیم بی بی سمیت 20 افراد کے خلاف اغواء کا مقدمہ نمبری 32/19 درج کرکے تفتیش شروع کر دی ہے۔ ایس ایچ او تھانہ فرید نگر نے کہا ہے کہ ملزمان کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارے جارہے ہیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں