293

پاکپتن: پرائمری تک تعلیم پنجابی زبان میں دی جائے. ماں کے بولی کے عالمی دن کے حوالہ منعقدہ ریلی کے شرکاء کا مطالبہ.

پاکپتن (رانا صفدر سے) گذشتہ دنوں مادری زبان کے عالمی دن کے موقع پر پنجاب لوک لہر اور سانجھ لوک راج اور پریس کلب پاکپتن کے زیر اہتمام ریلی کا انعقادریلی میں مختلف مکتبہ فکر لوگوں نے شرکت کی ریلی کے شرکاء نے پنجاب کی دھرتی کے روائتی لباس زیب تن کیے اور سرپر پگڑیاں باندھیں ریلی پریس کلب پاکپتن سے شروع ہوئی اور کالج روڈ،نگینہ چوک،ٹاؤن ہال سے ہوتی ہوئی دربار بابا فرید کے سامنے اختتام پذیر ہوئی ریلی کی قیادت پنجاب لوک لہر کے مرکزی صدر قسور مبارک بٹ جنرل سیکرٹری راجہ جہانگیر سانجھ لوک لہر کے چیئرمین شیخ مسعود خالد پریس کلب پاکپتن کے صدر وقارفرید جگنوسانجھ کے صدر اختر علی خاں،جنرل سیکرٹری پروفیسر ماجد غفورمیڈیا سیکرٹری لیکچرار عمرگڈو،سٹیزن رائٹس اینڈ ویلفیئر آرگنائزیشن کے صدر، رانا اویس عابد ایڈووکیٹ، پروفیسرمحمد جلیل بٹ نے کی. ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ پنجاب کے عظیم صوفی شاعروں بلھے شاہ، خواجہ غلام فری، دمیاں محمد بخش، میاں میر کی شاعری پنجابی زبان میں ھے اور اس شاعری کو پڑھ کر انسان امن و بھائی چارے کی طرف مائل ھوتا ھے دہشتگردی اور معاشرتی نفرت کے خاتمے کے لیے ضروری ھے کہ ھماری نئی نسل پنجابی زبان کی اس شاعری کو پڑھ لکھ اور سمجھ سکے اور یہ تبھی ممکن ھے جب پرائمری تک تعلیم پنجابی زبان میں کی جائے ریلی کے شرکاء نے مطالبہ کیا کہ پرائمری تک پنجابی زبان میں تعلیم دی جائے تاکہ نئی نسل اپنی مادری زبان سے متعلق مکمل آگاھی حاصل کر سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں