267

سوات: پریس کلب کی سرکاری عمارت پر قابض مافیا کے خلاف کارکن صحافیوں کا احتجاج.

مینگورہ (ملک حکیم صاحبزادہ خان عمر خیل )سوات پریس کلب اور سوات یونین آف جرنلٹس کا احتجاجی کیمپ موسمی سختیوں کے باوجود جاری، احتجاجی کیمپ میں ضلع بھر کی مختلف تحصیلوں کے صحافیوں نے شرکت کی، جب کہ سول سوسائٹی اور مختلف سیاسی جماعتوں کے عہدیداروں اور رہنماؤں نے صحافیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا، سوات پریس کلب کی سرکاری عمارت پر قابض مافیا کے خلاف کارکن صحافیوں کا احتجاجی کیمپ ضلعی کچہری کے سامنے دوسرے دن شدید بارش کے باوجود جاری ہیں جس میں کارکن صحافیوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی جب کہ صحافیوں سے اظہار یکجہتی کیلئے سول سوسائٹی اور سیاسی و سماجی رہنماؤں کی آمد بھی جارہی ہے، سوات کے ان کارکن صحافیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے پشاور پریس کلب کے صدر سید ظاہر شاہ نے سوات یونین آف جرنلٹس کے صدر رفیع اللہ خان کو بتا یا کہ پریس کلب کارکن صحافیوں کیلئے ہیں نہ کہ اخبار مالکان کیلئے، انہوں نے سوات میں جاری صحافیوں کے احتجاجی کیمپ میں شرکت کرنے اور ان کے ساتھ اظہار یکجہتی کا اعلان کیا ، احتجاجی کیمپ میں پریس کلب کے صدر شاہد علی خان ، چیف آرگنائزر رحمت علی خانجی سوات یونین آف جرنلٹس کے صدر رفیع اللہ خان و دیگر عہدیداران و ممبران برکت علی خان ، ملک قوت خان ، معروف شاہ ، انور شاہ ، جاوید اقبال ، صمد انجم ، ذاکر محمد ، ملک صاحبزادہ خان عمر خیل ، اصلاح الدین ہاشمی ، سہیل باچہ ، کرم سواتی نے خطاب کرتے ہوئے بتا یا کہ وزیر اعلیٰ کے دورہ سوات کے موقع پر کارکن صحافی بھرپور احتجاج کرینگے ، اور احتجاجی کیمپ وزیر اعلیٰ کے رہائش گاہ کے سامنے بھی لگانے کی حکمت عملی تیار کی جارہی ہے ، مقررین نے اپنے خطاب میں ریجنل انفارمیشن آفیسر غلام حسین غازی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ غلام حسین غازی اس سلسلے میں جانبرداری کا مظاہرہ کرے اور کارکن صحافیوں کے حقوق پر معنیٰ خیز خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں مقررین نے کہا کہ احتجاجی کیمپ صحافیوں کے حقوق اور پریس کلب کے قابض مافیا مذید 5دن جاری رہے گا انہوں نے خبر دار کیا کہ ان کے مطالبات نہ ماننے گے تو حالت کی تمام تر ذمہ داری ضلعی انتظامیہ پر عائد ہوگی ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں