314

ساہیوال: فورٹیفائیڈ خوراک کے استعمال سے ہی پاکستان کی آنے والی نسلوں کو غذائی کمی کا شکار ہونے سے بچایا جاسکتا ہے۔فاروق صادق، آیڈیشنل ڈپٹی کمشنر.

ساہیوال(خصوصی رپورٹ) فورٹیفائیڈ خوراک کے استعمال سے ہی پاکستان کی آنے والی نسلوں کو غذائی کمی کا شکار ہونے سے بچایا جاسکتا ہے۔ اس سلسلہ میں حکومت تمام ضروری اقدامات اٹھا رہی ہے تاکہ ملک میں غذائی کمی کو کم کیا جاسکے۔ ان خیالات کا اظہار ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ساہیوال فاروق صادق نے سماجی تنظیم آگاہی کے زیر اہتمام مقامی ہوٹل میں فوڈ فورٹیفیکشن پروگرام کی ڈسٹرکٹ ساہیوال میں لانچنگ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب سے ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر شفیق اعوان ،ڈپٹی ڈائریکٹر پنجاب فوڈ اتھارٹی ڈاکٹر عمیر ستار،ڈسٹرکٹ آفیسر ہیلتھ ڈاکٹر اظہر نقوی ،اسسٹنٹ ڈائریکٹر فوڈ چوہدری فیاض احمد گجر،سی ای او ایجوکیشن میاں ذوالفقار علی ،سی ای او آگاہی مبارک علی سرور ،پروفیسر جلیل بٹ ،پروفیسر ڈاکٹر محمد طارق اور پروانشل کنسلٹنٹ ایف ایف پی رضا قاضی سمیت دیگر نے بھی خطاب کیا ۔مقررین نے کہا کہ 2011 کے نیشنل نیوٹریشن سروے کے مطابق پاکستان میں 62 فیصد بچے اور 51 فیصد خواتین خون کی کمی کا شکار ہیں۔پاکستان میں خوراک میں غذائیت کی کمی کو پورا کرنے کیلئے ضروری ہے کہ فولک ایسڈ، فولاد، آئرن، زنک، وٹامن B12 وٹامنA اور D سے بھرپور فوٹیفائیڈ خوراک کا استعمال کیا جانا بے حد ضروری ہے۔ فوڈ فورٹیفیکشن پروگرام ملک بھر میں غذائی کمی کو پورا کرنے کیلئے فلور ملز اور گھی اینڈ آئل ملز کو فورٹیفائیڈ آٹا اور گھی بنانے کیلئے بھرپور معاونت فراہم کررہا ہے تاکہ ملک بھر میں باآسانی فوٹیفائیڈ خوراک میسر ہوسکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں