245

ساہیوال: پرائیویٹ تعلیمی اداروں میں اساتذہ کا استحصال جاری،14ہزار تنخواہ کی بجائے 2سے 4ہزار لینے پر مجبور.

ساہیوال(خصوصی رپورٹ) پرائیویٹ تعلیمی اداروں میں اساتذہ کا استحصال جاری،14ہزار تنخواہ کی بجائے 2سے 4ہزار لینے پر مجبور۔گورنمنٹ رولز کے مطابق پرائیویٹ سیکٹرمیں ٹیچرکی کم ازکم تنخواہ 14ہزار روپے ہے لیکن ضلع بھرکے سینکڑوں چھوٹے بڑے پرائیویٹ سکولوں میں اساتذہ کا استحصال کیاجارہاہے۔ضلع بھر کے نجی تعلیمی اداروں میں اساتذہ کو 2سے 4ہزار روپے فی کس کے حساب سے ماہانہ تنخواہ دی جارہی ہے۔متعددسکول پیف سے بچوں کی تعدادکی مناسبت سے معاوضہ بھی حاصل کررہے ہیں۔ٹیچرزنے بتایاکہ ان کامعاشی استحصال کیاجارہاہے۔پیف اوربچوں کے والدین سے بھاری فیسیں وصول کرنے کے باوجود سکول مالکان انہیں صرف 2,3ہزار روپے ہی ماہانہ تنخواہ دیتے ہیں جس سے ان کا گزاراممکن نہ ہے ۔انہوں نے بتایاکہ محکمہ تعلیم کے چند کرپٹ ملازم بھی سکول مالکان کے ساتھ ملے ہوئے ہیں جو ہماری درخواستوں کودبالیتے ہیں جبکہ سکول مالکان ٹیچرزکو سکول سے نکالنے سمیت سنگین نتائج کی دھمکیاں دیکر خاموش کروالیتے ہیں۔اساتذہ نے کمشنر عارف انوربلوچ،ڈپٹی کمشنر محمد زمان وٹوسے نوٹس لیکر پوری اجرت دلوانے کا مطالبہ کیاہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں