330

پاکپتن: نشہ کی وباء ہماری نسل کو تباہ کرنے کے درپئے ہے اس کو روکنے کے لیے سماجی تنظیموں کی اس مہم میں بارایسوسی ایشن اپنی ہر طرح کی خدمات پیش کرتی ہے. راومحمد اکرم صدر بار ایسوسی ایشن

پاکپتن (حیدر علی شہزاد سے ) نشہ کی وباء ہماری نسل کو تباہ کرنے کے درپئے ہے اس کو روکنے کے لیے سماجی تنظیموں کی اس مہم میں بارایسوسی ایشن اپنی ہر طرح کی خدمات پیش کرتی ہے۔ان خیالات کا اظہار صدر بار ایسوسی ایشن راؤ محمد اکرم نے نشہ جیسی لعنت، جنسی تشدد اور سوشل میڈیا کا بے جا استعمال اس کی روک تھام اور بچوں میں صحت عامہ سے آگاہی کے حوالے سے انجمن فلاح مریضاں ، ڈسٹرکٹ اینٹی ٹی بی ایسوسی ایشن و پاکستان سوشل ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام سپیریئر گروپ آف کالجز پاکپتن کیمپس میں منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر چوہدری جاوید احمد سابق ایم پی اے وپارلیمانی سکرٹری نے کہا کہ ان برائیوں کے نقصانات کو جانتے بوجھتے ہیں پھر بھی ان سے باز نہیں آتے خدارا اس برائی کو روکیں۔ ڈائریکٹر کیمپس رانا شبیر نور نے اپنے خطاب میں کہا کہ کوئی وجہ نہیں کہ نوجوان اصلاح احوال کا بیڑہ اٹھائیں اور ملک کا مستقبل روشن نہ ہو۔ جنرل سیکرٹری بار ایسوسی ایشن امجد خان نے کہا کہ بڑوں کو بری عادات ترک کرکے بچوں اور نوجوانوں کے لیے مثال بننا ہوگا،جنرل سیکرٹری پاکستان سوشل ایسوسی ایشن حکیم لطف نے کہا کہ نوجوان نسل ہمارا مستقبل ہیں اور تعلیمی استعداد میں بھی اضافہ ہوتاجارہا ہے ایسے میں کوئی وجہ نہیں کہ ہم معاشرے کو نشہ جیسی لعنت سے پاک نہ کرپائیں، جنسی بے راہ روی، سوشل میڈیا کا غلط استعمال، ہماری نوجوان نسل کو مفلوج کئے جارہا ہے۔ ہم اپنی جانوں کے ساتھ نہیں کھیل سکتے اور معاشرہ میں موجود ناسوروں کے ہتھکنڈے کبھی بھی ان نوجوانوں کو گمراہ نہ کاپائیں گے۔ ڈاکٹر شاہد مرتضیٰ چشتی جنرل سیکرٹری انجمن فلاح مریضاں نے کہا کہ تمباکونوشی جو تمام نشوں کا نقطہ آغاذ ہے صرف اسی سے ہر چھ سیکند بعد اس دنیا سے قیمتی جان جارہی ہے اس سے 13سے زائد اقسام کے کینسر پیدا ہورہے ہیں ، نشہ کی لت ہماری نوجوان نسل کو دیمک کی طرح چاٹ کر کھوکھلا کرہی ہے ہمیں اس سے بچنا ہوگا۔ صدر پریس کلب پاکپتن وانجمن فلاح مریضاں وقار فرید جگنو نے کہا کہ تمباکونوشی، نشہ اور معصوم بچوں کے ساتھ جنسی تشدد ناقابل برداشت ہے اور اس کے مجرم کو سرعام لٹکا دینا چاہیے ہمیں بچوں کو اس جرم کے بارے میں آگاہی دے کر شعور بیدار کرنا ہوگا وہ کیسے اپنی حفاظت خود کرسکتے ہیں۔غلام نبی ڈھدی جنرل سیکرٹری سوشل ڈویلپمنٹ کونسل نے کہا کہ ہم اس پیغام کو گھر گھر پہنچاکر ان برائیوں کا خاتمہ کرکے دم لیں گے۔ سیمینار میں صحافی افتخار بھٹی، حیدر علی شہزاد ،طلباء اور اساتذہ کرام نے بالخصوص گہری دلچسپی کا مظاہرہ کیا اور عہد کیا کہ نہ صرف خود ان برائیوں سے دور رہیں گے بلکہ اس کے خلاف جہاد میں سماجی تنظیموں کے شانہ بشانہ ہوں گے۔ سپیریئر کالج کی طرف سے سیمینار میں شرکت کرنے والے مہمانوں کو یادگاری شیلڈز دی گئیں جبکہ پاکستان سوشل ایسوسی ایشن کی طرف سے ڈائریکٹر کیمپس رانا شبیرنور کو تنظیم کا سب سے بڑا اعزاز قائد اعظم گولڈ میڈل پیش کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں