456

ری سائیکلنگ اور سنیہ رحمان … میک پاکستان گرین.

میک پاکستان گرین

ری سائیکلنگ سے مراد پرانی اشیاء جنہیں ہم ضائع سمجھ کر پھینک دیتے ہیں خواہ وہ پلاسٹک کی ایک خالی بوتل ہی کیوں نہ ہو اس کو پھینکنے کی بجائے دوبارہ استعمال میں لانے کو ری سائیکل کرنا کہتے ہیں اور دنیا کے ترقی یافتہ ممالک میں ری سائیکلنگ عام ہے۔آج ہم آپ کا تعارف کروائیں گے پاکستان کی ایک بہت ہی باہمت بیٹی سے جنہوں نے زمانہ طالب علمی میں ہی ری سائیکلنگ پرکام شروع کردیا تھا مگر تب یہ محض شوق کی حد تک تھا اس کے بارے میں زیادہ علم نہیں تھا ۔لیکن وہ ہمیشہ چیزوں کو پھینک دینا اور ضائع کردینا اسے بہت برا سمجھتی تھیں۔راولپنڈی سے تعلق رکھنی والی سنیہ رحمان جنہوں میں پاکستان میں اس کی آگاہی فراہم کے لیے بہت جدوجہد کی۔آپ پنجاب یونیورسٹی سے فائن آرٹس میں گریجوایٹ ہیں۔پاکستان میں پھیلتی ہوئی گندگی اور غلاظت پر صرف تنقید کردینے سے پاکستان بہتر نہیں ہوگا بلکہ اس کے لیے عملی اقدامات کرنے پڑتے ہیں اور اپنے حصہ کی شمع روشن کرنا پڑتی ہے۔ یہی شمع پاکستان کی اس عظیم بیٹی نے روشن کی اور “Importance of Recycling”پر کام کا آغاز کردیا۔شروع میں کسی نے ساتھ نہ دیا نہ شوہر نے نہ گھر والوں نے مگر انہوں نے ہمت نہیں ہاری اور اس اچھے مشن کو جاری رکھا۔کچن کی روزمرہ کی استعمال شدہ اشیاء کو دوبارہ کیسے استعمال میں لا سکتے ہیں ۔اور بہت بہترین طریقے سے غیر ضروری اور جنہیں ہم ضائع شدہ سمجھ کر پھینک دیتے ہے ان کو ری سائیکل کرکے باآسانی استعمال میں لانے کا فن سنیہ رحمان صاحبہ نے پیش کیا اور اس حوالے سے ان کی سوشل میڈیا سائیٹس پر بے شمار لیکچرز ویڈیوز آپ دیکھ سکتے ہیں۔سینہ رحمان کا کہنا ہے کہ جب سے ان کے کام کو سراہایا جانے لگا ہے انکے گھر والے بھی ان کے کام سے خوش ہو گئے ہیں۔ ان کے جتنے بھی فالورز ہیں انکی انتھک محنت کی بدولت ہیں ۔یوٹیوب پر 15,000لوگ ان کے چینل کو جوائن کر چکے ہیں اور لاکھوں کی تعدا میں انکی ویڈیوز دیکھی جاتی ہیں۔انکا مزید کہنا ہے کہ اپنے گھر کی صفائی کے ساتھ ساتھ اپنے ملک کی صفائی کا بھی خیال رکھیں ۔پلاسٹک کے استعمال سے گریز کریں اور گھر پر کچھ بھی بنا سوچے سمجھے نہ پھینکیں چاہے وہ شاپر یا چھوٹاساایک سڑا (بوتل کے ساتھ ملنے والا پائپ) یا آپ کی کی جیولری کا ٹوٹا ہوا موتی ہی کیوں نہ ہو۔ری سائیکل کریں اور اگر آپ کے ذہن میں کوئی آئیڈیا نہ ہو تو آپ میرا چینل وزٹ کریں “Buy Less Use More” “Make Pakistan Gree”
میری ہر ویڈیو کے اختتام پر “Made in Pakistan”لکھا ہوتا ہے تاکہ جب باہر سے لوگ دیکھیں تو انہیں پتا چلے کہ دنیامیں جو ماحول کو ٹھیک کرنے کی کوششیں ہو رہی ہیں ان میں زیادہ تر ترقی یافتہ ممالک شامل ہیں اور ساتھ ایک ایسا ملک بھی شامل ہے جو شاید ان کے مقابلے میں تو نہیں مگر ان سے پیچھے بھی نہیں۔ پاکستان کی اس عظیم بیٹی کی کاوشوں کو ٹیم میک پاکستان گرین سلام پیش کرتی ہے اور انکے لیے دعاگو ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں