274

ہمیں اپنے نوجوانوں کو نشہ جیسی لعنت سے دور رکھنے کے لیے ان کی ذہنی تربیت کرنا ہوگی. طارق انجم چوہدری

پاکپتن(وقار فرید جگنو سے) ہمیں اپنے نوجوانوں کو نشہ جیسی لعنت سے دور رکھنے کے لیے ان کی ذہنی تربیت کرنا ہوگی اور ان کے اندر اپنی عزت نفس اور احساس ذمہ داری پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ ان کوذہنی وجسمانی تفریح اور کھیل کے میدان نیز مثبت سرگرمیوں کے مواقع فراہم کرنے ہوں گے۔ ان خیالات کا اظہار ممتاز ماہر تعلیم طارق انجم چوہدری سینئر ہیڈ ماسٹر گورنمنٹ ہائی سکول اربن ایریا نے اپنے سکول میں انجمن فلاح مریضاں اور ڈسٹرکٹ اینٹی ٹی بی ایسوسی ایشن کے زیر انتظام ’’نشہ کی لت نوجوان نسل کی تباہی کا سبب‘‘ کے عنوان سے منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔جنرل سیکرٹری ڈسٹرکٹ اینٹی ٹی بی ایسوسی ایشن حکیم لطف اللہ نے کہا کہ نشہ کے عادی افراد مجرم نہیں مریض ہیں نشہ کے پھیلاؤ کے پیچھے جہاں دیگر اسباب کارفرما ہیں وہیں اس کاروبار سے منسلک مافیا ایک بہت بڑی وجہ ہے ۔ڈاکٹر شاہد مرتضیٰ چشتی جنرل سیکرٹری انجمن فلاح مریضاں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہر 6سیکنڈ میں ایک جان اس موذی لت کی وجہ سے ضائع ہورہی ہے اور سالانہ ساٹھ لاکھ میں سے چھ لاکھ سے زائد ہلاکتیں صرف سیکنڈ ہینڈ تمباکونوشی سے واقع ہوجاتی ہیں ۔ نوجوان سوشل ایکٹویسٹ مستنصر کامران نے کہا کہ نوجوان خود بھی اس موذی مرض سے بچیں اور اپنے ساتھیوں ودیگر رشتہ داروں کو بھی بچائیں تب ہی ہماری آنے والی نسلیں اس سے بچ سکتی ہیں۔ وقار فرید جگنو صدر پریس کلب پاکپتن نے کہا کہ نوجوان میں ایسے منفی نشوں کی بجائے مثبت نشہ سماجی خدمت کو اپنا شعار بنا کر اس دنیا کو امن وآشتی کا گہوارہ بناسکتے ہیں۔ سیمینار سے سکول کے طلباء اور اساتذہ نے کثیر تعداد میں شرکت کی اور مہمانوں کو سکول کے مختلف حصوں کا دورہ کروایا اور کاکردگی سے آگاہ کیا۔ طالب علم راہنما مستنصر کامران نے کہا کہ نوجوان صحت مندانہ سرگرمیوں میں حصہ لیں اوراپنے اندر خون کے عطیات دینے کا جذبہ پیدا کریں.

You can only have direct referrals after 15 days of being a user and having at least 100 clicks credited

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں