445

نعت شریف (شگفتہ یا سمین..چیچہ وطنی)

شاعرہ: شگفتہ یاسمین، چیچہ وطنی

You can only have direct referrals after 15 days of being a user and having at least 100 clicks credited

چاہت کو تیری آقا میں دل میں بسا لوں
اور خاک مدینہ کو پلکوں میں سجالوں

بندھ جائے کبھی میرا بھی جانے کا سفینہ
خوابوں میں ہی ہوجائے جو دیدار مدینہ

سفنہ دیکھوں تو آنکھوں میں چھپا لوں
چاہت کو تیری آقا میں دل میں بسا لوں

آئے جو بلاوا مجھے کبھی تیرے در سے
خوشیوں بھری جھولی ملے تیرے گھر سے

روضے کو جو میں اپنے سینے سے لگا لوں
نگاہوں میں جو بس جائے گنبد کا نظارہ

مدینے میں بلا لے آقا نہیں ہوتا گزارہ
سنت تیری میں اپنے عملوں میں رچا لوں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں