196

ساہیوال میں قائم اعلیٰ تعلیم کے اداروں کے مسائل کو بھی ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے گا. عارف انور بلوچ کمشنر

ساہیوال (خصوصی رپورٹ) کمشنر ساہیوال ڈویژن عارف انور بلوچ نے کہا ہے کہ اعلیٰ تعلیم کے فروغ میں حائل تمام رکاوٹوں کو دور کر کے ہی نوجوان نسل کو مستقبل کے چیلنجزکا مقابلہ کرنے کے لئے تیار کیا جا سکتا ہے اور موجودہ حکومت ایک جامع منصوبے کے تحت صوبے کے تمام علاقوں میں اعلیٰ تعلیم کے ادارے قائم کر رہی ہے تاکہ دور دراز علاقوں میں مقیم نوجوانوں کو بھی اپنی صلاحیتوں کو نکھارنے کے مواقع دستیاب ہو سکیں ۔ ساہیوال میں قائم اعلیٰ تعلیم کے اداروں کے مسائل کو بھی ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے گا تاکہ اس مردم خیز خطے سے ہر شعبہ زندگی میں نمایاں کامیابیاں سمیٹنے والے نوجوان تیار ہو سکیں ۔ انہوں نے یہ بات اپنے دفتر میں ساہیوال ڈویژن میں قائم اعلیٰ تعلیمی اداروں کے سربراہوں سے خصوصی ملاقات میں کہی۔ جس میں یونیورسٹی آف ساہیوال کے وائس چانسلر ڈاکٹر محمدناصر افضل، یونیورسٹی آف اوکاڑہ کے وائس چانسلر ڈاکٹر محمد ذکریا ذاکر ، ساہیوال میڈیکل کالج کے پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر محمد طارق، کامسیٹ یونیورسٹی ساہیوال کیمپس کے ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر سلیم فاروق شوکت ، ایرڈ یونیورسٹی ساہیوال کیمپس کے چیف ایگزیکٹو آفیسر میاں محمد ساجد کے علاوہ دوسرے ادروں کے سربراہوں نے بھی شرکت کی۔ انہوں نے کہا کہ اعلیٰ تعلیم کے بغیر قوموں کی ترقی نا ممکن ہے اور ہمیں اپنی نوجوان نسل کو جدید تعلیم سے بہرہ مند کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے۔ انہوں نے مقامی یونیورسٹیوں میں اساتذہ کی کمی کو بڑا مسئلہ قرار دیتے ہوئے اسے جلد دور سے ہم آہنگ کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ اس سے پہلے ساہیوال اور اوکاڑہ یونیورسٹیوں کے وائس چانسلرز نے کہا کہ دونوں یونیورسٹیاں شدید مالی بحران سے دوچار ہیں جنہیں فوری حل کرنے کی اشد ضرورت ہے ۔ کمشنر عارف انور بلوچ نے مسئلے کی سنگینی کے پیش نظر فوری طور پر سیکرٹری ہائر ایجوکیشن پنجاب سے ٹیلی فون پربات کی اور دونوں یونیورسٹیوں کے تمام مسائل کو ترجیحی بنیادوں حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا تاکہ طلبہ و طالبات کے تعلیمی معاملات میں کوئی رخنہ نہ پڑے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں